60 لاکھ روپے کی گھڑی، 30 ہزار روپے کی شراب اور۔۔۔ زمبابوے کے صدر موگابے کے بیٹے کی وہ ایک شرمناک ویڈیو جس پر عوام اور فوج دونوں کا صبر جواب دے گیا، مارشل لاءکی بڑی وجہ بن گئی

60 لاکھ روپے کی گھڑی، 30 ہزار روپے کی شراب اور۔۔۔ زمبابوے کے صدر موگابے کے بیٹے ...
60 لاکھ روپے کی گھڑی، 30 ہزار روپے کی شراب اور۔۔۔ زمبابوے کے صدر موگابے کے بیٹے کی وہ ایک شرمناک ویڈیو جس پر عوام اور فوج دونوں کا صبر جواب دے گیا، مارشل لاءکی بڑی وجہ بن گئی

  

ہرارے (نیوز ڈیسک) زمبابوے کے صدر رابرٹ موگابے کے تقریباً نصف صدی پر محیط اقتدار کا سورج بالآخر غروب ہو گیا ہے۔ اپنے ملک پر مطلق العنان حکمرانی کرنے والا یہ ڈکٹیٹر آج اپنی ہی فوج کے ہاتھوں رسوا ہو کر تخت سے محروم ہو چکا ہے، اور اس کی اپنی ہی پارٹی نے اسے اور اس کی اہلیہ گریس موگابے کو پارٹی سے خارج کر دیا ہے۔

صدر موگابے کی اقتدار سے محرومی کی گو بہت سی وجوہات ہیں لیکن ان کی اور ان کے بیوی بچوں کی کرپشن اور عیاشی اس کی بنیادی وجہ بنی ہے۔ اس خاندان کی عیاشیوں کی داستانیں تو دہائیوں سے میڈیا میں گردش کر رہی تھیں لیکن حال ہی میں موگابے کے چھوٹے بیٹے کی ایک ایسی شرمناک ویڈیو سامنے آئی کہ جسے دیکھ کر عوام اور فوج دونوں کا ہی صبر جواب دے گیا۔

زمبابوے میں مارشل لاء، ایک طرف ہزاروں لوگ بھوکے مرتے رہے اور دوسری جانب صدر موگابے کی بیگم نے کروڑوں روپے کس عیاشی میں اُڑا دئیے، جان کر پاکستانی بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

میل آن لائن کے مطابق رابرٹ موگابے کے بیٹے چٹونگا بیلرمائن موگابے نے یہ ویڈیو ایک نائٹ کلب میں پارٹی منانے کے دوران منائی۔ ویڈیو میں اسے ایک قیمتی گھڑی کے اوپر شراب انڈیل کر اس کا خانہ خراب کرتے دیکھا جا سکتا ہے، لیکن اس بگڑے ہوئے شہزادے کو معلوم نہیں تھا کہ یہ ویڈیو اس کے باپ کے اقتدار کا خانہ خراب کر دے گی۔

ویڈیو میں چٹونگا موگابے گھڑی پر شراب انڈیلتے ہوئے کہتا ہے ”میں کچھ بھی کر سکتا ہوں۔ میرا باپ اس ملک کا حکمران ہے۔ وہ اس ملک کی ہر چیز کا مالک ہے۔ میں کچھ بھی کر سکتا ہوں۔ مجھے کوئی روک نہیں سکتا۔“ شراب کے نشے میں دھت یہ نوجوان اسی طرح کا مزید اول فول بھی بکتا ہے۔ جلد ہی یہ ویڈیو زمبابوے کے سوشل میڈیا پر جنگل کی آگ کی طرح کی پھیل رہی تھی۔ ویڈیو دیکھنے والوں کو جس بات نے سب سے زیادہ مشتعل کیا وہ یہ تھی کہ چٹونگا کے ہاتھ میں جو شراب کی بوتل تھی اس کی قیمت 30ہزار روپے تھی، اور وہ جس گھڑی پر شراب انڈیل رہا تھا وہ 60 لاکھ روپے کی تھی۔ یہ سب ایک ایسے ملک کے حکمران کا بیٹا کر رہا تھا جس کی 70 فیصد سے زائد آبادی دو وقت کی روٹی کو ترس رہی ہے۔

اب ایسے میں عوام آگ بگولا نا ہوتے تو اور کیا کرتے؟ پورے ملک میں اس بیہودہ حرکت پر سخت ناراضی کا اظہار کیا گیا، اور ساتھ ہی چٹونگا کی والدہ یعنی خاتون اول گریس موگابے کی شاہ خرچیوں کا بھی میڈیا میں کھل کر تذکرہ ہونے لگا۔ موصوفہ ہر سال کروڑوں ڈالر کی شاپنگ امریکا اور یورپ جا کر کرتی ہیں اور یہ سلسلہ کئی دہائیوں سے جاری ہے۔ اس کے ساتھ ہی موگابے کے بڑے بیٹے کے حال ہی میں دو قیمتی رولز رائس کاریں منگوانے کا سکینڈل بھی سامنے آ گیا۔

یکے بعد دیگرے یہ معاملات کچھ یوں سامنے آئے کہ بالآخر فوج کو قدم اٹھانا پڑا اور صدر موگابے کو گھر میں نظر بند کر کے اقتدار پر قبضہ کرناپڑا۔ اب یہ عیاش خاندان نا صرف اقتدار سے باہر ہو چکا ہے بلکہ توقع کی جا رہی ہے کہ جلد ہی ان کے احتساب کا سلسلہ بھی شروع ہونے والا ہے۔

مزید : بین الاقوامی