تحریک نفاذ شریعت محمدی کے سربراہ صوفی محمد کی دوران حراست طبیعت بگڑ گئی

تحریک نفاذ شریعت محمدی کے سربراہ صوفی محمد کی دوران حراست طبیعت بگڑ گئی
تحریک نفاذ شریعت محمدی کے سربراہ صوفی محمد کی دوران حراست طبیعت بگڑ گئی

  


پشاور (ڈیلی پاکستان آن لائن) کالعدم تحریک نفاذ شریعت محمدی کے سربراہ صوفی محمد کی دوران حراست طبیعت بگڑ گئی ہے۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ تحریک نفاذ شریعت محمدی کے سربراہ صوفی محمد کی طبیعت خراب ہونے پر انہیں جیل ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں ڈاکٹرز ان کا علاج کر رہے ہیں۔

یہ خبر بھی پڑھیں: طالبان نے کافروں سے زیادہ اسلام کو نقصان پہنچایا، عوام اور رشتے دار تاقیامت بائیکاٹ جاری رکھیں: صوفی محمد کا وصیت نامہ

واضح رہے کہ صوفی محمد نے سوات میں تحریک نفاذ شریعت محمدی کی بنیاد رکھ کر ملک میں شرعی نظام کے نفاذ کی تحریک چلائی تھی، تحریک کے پرتشدد رویے اور ریاست کے اندر ریاست قائم کرنے جیسے افعال کی وجہ سے 2009 میں اس کے خلاف آپریشن راہ راست کیا گیا اور صوفی محمد کو جیل میں ڈال دیا گیا۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: عدالت نے صوفی محمدکو دہشتگردی کے مقدمات میں بری کردیا،کیسز عام عدالت میں منتقل کرنے کا حکم

صوفی محمد کا داماد ملا فضل اللہ اس آپریشن کے دوران فرار ہوگیا جس نے بعد میں تحریک طالبان پاکستان کے نام پر ملک بھر میں خود کش دھماکوں کے ذریعے بچوں اور خواتین سمیت معصوم لوگوں کا قتلِ عام کیا۔

مزید خبریں: کالعدم تحریک نفاذ شریعت کے امیر مولاناصوفی محمد کو کبل تھانہ حملہ کیس سے بری

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی صوفی محمد کی دورانِ حراست طبیعت خراب ہوئی تھی، گزشتہ سال فروری میں ان کی طبیعت خراب ہوئی تو انہوں نے علاج سے انکار کردیا جبکہ جولائی 2016 میں شوگر اور گردے کی تکلیف کے باعث صوفی محمد کا پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں علاج کیا گیا تھا۔ ان کی رواں سال مارچ میں بھی طبیعت خراب ہوئی تھی لیکن اس بار بھی انہوں نے علاج کرانے سے انکار کردیا تھا۔

مزید : پشاور /اہم خبریں