کوکا کولا نے 8 گھنٹے پورا لاہور شہر جام کردیا، پولیس نے مقدمہ درج کرلیا

کوکا کولا نے 8 گھنٹے پورا لاہور شہر جام کردیا، پولیس نے مقدمہ درج کرلیا
کوکا کولا نے 8 گھنٹے پورا لاہور شہر جام کردیا، پولیس نے مقدمہ درج کرلیا

  



لاہور (ویب ڈیسک) کوک انتظامیہ اور حکام  کی نا اہلی  کی وجہ سے مقامی ہوٹل میں منعقد کیا جانے والا فوڈ فیسٹیول شہریوں کےلیے وبال جان بن گیا ،فیسٹیول کے موقع پر سٹی ٹریفک پولیس کے 3لفٹر اور درجنوں اہلکار ٹریفک کنٹرول کر نے میں بری طرح ناکام ،شالیمار، باغبانپورہ اور مغلپورہ کے علاقے لاہور سے کٹ کر رہ گئے، بدترین ٹریفک جام سے شہری بدحال ، ایمبولینسیں اور دیگر امدادی گاڑیاں بھی ٹریفک جام میں پھنسی رہیں، ہوٹل انتظامیہ سرے سے کنسرٹ سے ہی لاعلم نکلی اور کہا کہ انہیں صرف فوڈ فیسٹول کا بتایا گیا تھا تاہم چیف ٹریفک افسر رائے اعجاز حسین نے بتایا کہ سڑک بلاک کرنے اور ٹریفک کے بہاﺅمیں خلل ڈالنے پر کوک انتظامیہ کے خلاف مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی گئی ہے ۔

بتایا گیا ہے کہ گزشتہ روز مقامی ہوٹل میں کوک فوڈفیسٹیول کا انعقاد کیا گیا جس میں موسیقی سمیت مختلف سٹالز وغیرہ لگا ئے گئے تھے۔ اتوار کے روز چھٹی ہونے کی وجہ سے کوک فوڈفیسٹیول میں شہریوں کی بڑی تعداد کی آمد پرکوک فوڈ فیسٹیول منعقد کروانے والی انتظامیہ کی جانب سے ناقص انتظامات کی بناءپر ہوٹل کے باہر رانگ پارکنگ اور ٹریفک کے درہم برہم نظام کے باعث گاڑیوں کی لمبی لائنیں لگ گئیں اور دیکھتے ہی دیکھتے بدترین ٹریفک جام ہو گیا۔اس موقع پر گاڑیوں کی لمبی لائنیں لگ گئیں اور شہری کئی گھنٹوں تک بدترین ٹریفک جام میں اذیت سے دوچار ہوتے رہے۔

مقامی ہوٹل کے ترجمان نے بتایا ہے کہ کوکا کولا فوڈ فیسٹیول کی انتظامیہ نے ہمیں یہ نہیں بتایا کہ وہ اس میں کنسرٹ بھی کررہے ہیں۔ کنسرٹ کی وجہ سے لوگوں کی تعداد بڑھ گئی اور زیادہ گاڑیوں کی وجہ سے پارکنگ مسائل بڑھے۔ اس میں ہمارا کوئی قصور نہیں کوکا کولا کو چاہیے تھا کہ وہ ہمیں صورتحال سے آگاہ کرتے۔ ترجمان نے بتایا کہ رات گئے پولیس کی مدد سے ٹریفک جام پر قابو پالیا گیاہے۔

ادھر چیف ٹریفک آفیسر رائے اعجاز نے کہا کہ فیسٹیول کے حوالے سے کوک انتظامیہ کی جانب سے میسج کے ذریعے تشہیر کرکے لوگوں کو مدعو کیا گیا جس وجہ سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوا۔ ان کا کہنا تھا کہ کوک انتظامیہ کو پہلے سے کہا گیا تھا کہ وہ شہرمیں 4 مختلف جگہوں پر پارکنگ پوائنٹس بنا کر وہاں فی پوائنٹ 10 بسوں کے حساب سے40 بسیں چلائیں تاکہ ٹریفک میں خلل نہ پڑے لیکن انہوں نے کوئی عملدرآمد نہیں کیا جس وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ سی ٹی او رائے اعجاز کا کہنا تھا کہ کوک انتظامیہ پر روڈ بلاک کرنے اور ٹریفک بہاﺅ میں خلل ڈالنے کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا ہے اور اس پر کارروائی بھی کی جارہی ہے۔

مزید : لاہور