لوگ ڈی آئی خان میں پیش آنیوالے واقعہ کو روتے رہے لیکن اب پنجاب میں پانچویں جماعت کی طالبہ کیساتھ سرعام ایسا شرمناک ترین کام کردیا گیا کہ سن کر ہرشہری کانپ اٹھے

لوگ ڈی آئی خان میں پیش آنیوالے واقعہ کو روتے رہے لیکن اب پنجاب میں پانچویں ...
لوگ ڈی آئی خان میں پیش آنیوالے واقعہ کو روتے رہے لیکن اب پنجاب میں پانچویں جماعت کی طالبہ کیساتھ سرعام ایسا شرمناک ترین کام کردیا گیا کہ سن کر ہرشہری کانپ اٹھے

  



ٹیل والہ (ویب ڈیسک) لوگ ابھی ڈیرہ اسماعیل خان کے واقعے کو بھولے نہیں تھے کہ ٹیل والہ کے نواحی گاﺅں 62 ڈی بی کی کالونی کی رہائشی (ن) پانچویں کلاس کی طالبہ اپنے بہن بھائیوں کے ساتھ البدر سکول جارہی تھی کہ ملزمان محمد حنیف عرف حنیفا، اللہ رکھا عرف شموں ودیگر دو افراد موٹرسائیکل پر سوار ہوکر آگئے اور اسلحہ کے زور پر 12 سالہ لڑکی کو زیادتی کی نیت سے کماد کی طرف گھسیٹتے ہوئے لے گئے۔ اس کے کپڑے پھاڑ ڈالے اور برہنہ کرکے ویڈیو بھی بناتے رہے، دیگر بچوں کی چیخ وپکار پر اہل علاقہ رضوان اسلام، افتخار احمد ودیگر افراد کے آنے پر ملزمان بھاگ گئے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق لڑکی نے والد نے بتایا کہ جب ہم لوگ تھانے پہنچے تو اس علاقے کا بااثر شخص اسحاق پہلے ہی تھانے میں موجود تھا۔ ہمیں جاتے ہی تھانے کے ایک کمرے میں بند کردیا اور ہمیں ہراساں کرتے رہے اور ہماری منت سماجت کے بعد ہمیں سفید کاغذوں پر انگوٹھے لگوانے کے بعد ایس ایچ او نے رہا کیا۔ چیئرمین یونین کونسل ٹیل والہ شاہد شبیر نے بتایا کہ یہ لوگ پہلے بھی کئی افراد اور عورتوں کے ساتھ ایسی حرکتیں کرچکے ہیں اور یہ لوگوں سے بھتہ بھی وصول کرتے ہیں۔اہل علاقہ نے وزیراعلیٰ پنجاب سے ملزمان کی گرفتاری اور پورے تھانے کے خلاف بھی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : جرم و انصاف