پاکستان کی کروڑوں ڈالر کی قیمتی ترین چیز سرکاری ملازمین نے کوڑے میں پھینک دی

پاکستان کی کروڑوں ڈالر کی قیمتی ترین چیز سرکاری ملازمین نے کوڑے میں پھینک دی
پاکستان کی کروڑوں ڈالر کی قیمتی ترین چیز سرکاری ملازمین نے کوڑے میں پھینک دی

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) محکمہ آثار قدیمہ نے کروڑوں ڈالر مالیت کے بدھا کے 5قدیم مجسمے سمگلروں کے قبضے سے برآمد کرانے کے بعد نیشنل میوزیم کراچی میں نمائش کے لئے میوزیم کی انتظامیہ کے حوالے کئے مگر سرکاری اہلکاروں نے ان قیمتی مجسموں کی نمائش کرنے کی بجائے انہیں عجائب گھر کے کوڑے میں پھینک دیا۔

آپ اتنے نااہل ہو چکے ہیں،حکومتی رٹ قائم نہیں کر سکتے،اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیض آباد دھرنے سے متعلق کیس میں ریمارکس،سماعت جمعرات تک ملتوی

انگریزی روزنامے ” ایکسپریس ٹریبیون“ سے گفتگو کرتے ہوئے نیشنل میوزیم کراچی کے ایک ملازم کا کہنا تھا کہ گذشتہ کئی مہینوں سے یہ مجسمے کوڑے میں پڑے ہوئے ہیں۔ بدھا کے یہ مجسمے تین سے چار فٹ تک لمبے ہیں اور قیمتی پتھر سے تیار کئے گئے ہیں۔ نیشنل میوزیم کے ڈائریکٹر محمد شاہ کا کہنا تھا کہ ہم نے کوئی بھی مجسمہ کوڑے میں نہیں پھینکا بلکہ تمام مجسموں کی صفائی کا کام کیا جا رہا ہے اور بجٹ کی کمی کی وجہ سے مجسمے نمائش کے لئے پیش کرنے میں دقت پیش آرہی ہے۔ انتظامیہ جلد ہی ان مجسموں کو نمائش کے لئے پیش کردے گی۔اخبار کی رپورٹ کے مطابق ان مجمسوں کو  سمگلروں سے برآمد کیا گیا ، جو کہ 1500 سال قدیم ہیں اور ان کی مالیت کروڑوں ڈالر ہے ۔

مزید : کراچی