ملتان میں پولیس اہلکاروں نے بزرگ جوڑے پر ظلم کی انتہا کر دی ،سر عام تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے تھانے لے گئے

ملتان میں پولیس اہلکاروں نے بزرگ جوڑے پر ظلم کی انتہا کر دی ،سر عام تشدد کا ...
ملتان میں پولیس اہلکاروں نے بزرگ جوڑے پر ظلم کی انتہا کر دی ،سر عام تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے تھانے لے گئے

  

ملتان(ڈیلی پاکستان آن لائن ) پنجاب پولیس نے ظلم کی انتہا کرتے ہوئے تھانہ چہلیک کی حدود میں اہلکاروں نے بزرگ جوڑے کو قبضے کے خلاف احتجاج کرنے پر شدید تشدد کا نشانہ بنایا۔

تفصیلات کے مطابق ملتان میں بزرگ جوڑا پولیس تشدد کا نشانہ بن گیا۔ 75 سالہ معمرخاتون نسیم بی بی اپنے شوہر کے ہمراہ ایم ڈی اے کے اہلکاروں کے خلاف احتجاج کررہی تھیں انہوں نے بینرز بھی اٹھارکھے تھے، جوڑے کا مو¿قف تھا کہ ایم ڈی اہلکار ہماری زمین پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں اور اس کے لئے ہمیں ڈرایا دھمکایا جارہا ہے۔لیکن ان کی فریاد پر کارروائی کرنے کے بجائے پولیس اہلکاروں نے ظلم کی انتہا کرتے ہوئے جوڑے پر تشدد شروع کردیا جب کہ اکرام بلوچ نامی ایم ڈی اہلکار نے بزرگوں کے ہاتھ سے بینرز چھین کر پھاڑ دیا، پولیس اہلکاروں نے احتجاج روکنے کے لئے معمر جوڑے کی سرِعام تذلیل کی اور سڑک پر گھسیٹے ہوئے پولیس موبائل تک لائے، ایس ایچ او غلام مرتضیٰ اور دیگر پولیس اہلکار بزرگ جوڑے کو تشدد کا نشانہ بنارہے ہیں اور تشدد کرتے ہوئے پولیس موبائل میں بٹھا کر تھانے لے گئے۔

خبر کے منظر عام پر آتے ہی آرپی او محمد ادریس نے ایس ایچ او چہلیک غلام مرتضیٰ اور دیگر پولیس اہلکاروں کو معطل کردیا جب کہ واقعے کی تحقیقات کے لئے ایس پی لیگل رانا محمد انور خان کو انکوائری افسر مقرر کردیا گیا ہے۔

ویڈیو دیکھیں:

.

مزید : قومی