مسئلہ کشمیر خارجہ پالیسی کا اہم ستون،امریکہ طالبان مذاکراتی عمل جلد بحال ہو جائیگا:شاہ محمود قریشی

مسئلہ کشمیر خارجہ پالیسی کا اہم ستون،امریکہ طالبان مذاکراتی عمل جلد بحال ہو ...

  



اسلام آباد(نیوزایجنسیاں) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ امریکہ طالبان مذاکراتی عمل جلد بحال ہوجائیگا،طالبان نے امریکہ کے دو مغوی باشندوں جبکہ امریکہ نے حقا نی گروپ کے افراد کو رہا کیا ہے،دونوں فریقین نے افغان  امن عمل میں پاکستان کی کوششوں کو سراہاہے، مسئلہ کشمیر ہماری خارجہ پالیسی کا اہم ستون ہے،نہتے کشمیریوں کی اْصولی جدوجہد میں، ان کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی معاونت جاری رکھیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے  پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس (پی ایف یو جے)، راولپنڈی اسلام آباد یونین آف  جرنلسٹس (آر آئی یو جے) اور نیشنل پریس کلب  کے عہدیداران سے ملاقات میں کیا۔صدر پی ایف یو جے افضل بٹ کی قیادت میں سینئر صحافیوں کے وفد کی وزارت خارجہ میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی۔شا ہ محمود قریشی نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ہماری خارجہ پالیسی کا اہم ستون ہے۔نہتے کشمیریوں کو بھارتی استبداد سے نجات دلانے اور کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی اْصولی جدوجہد میں، ان کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی معاونت جاری رکھیں گے۔افغانستان کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ امریکہ طالبان مذاکراتی عمل جلد بحال ہوجائے گا،پاکستان کی کوششوں سے امریکہ اور  طالبان کے درمیان مذاکرات جلد دوبارہ  شروع ہونے جارہے ہیں،شاہ محمود قریشی نے کہا کہ طالبان نے امریکہ کے دو مغوی باشندوں کورہا کردیا ہے جنہیں امریکہ کے  حوالے کردیا گیا ہے۔پاکستان نے مغوی امریکی باشندوں کی  رہائی میں اہم کردار ادا کیا۔انہوں نے کہا کہ جواب میں امریکہ نے بھی حقانی گروپ کے گرفتار افراد کو رہا کیا ہے جوواپس پہنچ چکے ہیں۔پاکستان کی کوششوں کو دونوں فریقین نے سراہا ہے،دوسری طرف ٹیلی کام سیکٹر سے منسلک ملائشیا کی معروف کمپنی ایڈٹکو گروپ (''edotco'')، کے وفد  نے  سی ای او عارف حسین اور سریش سدھو کی قیادت میں وزارت خارجہ میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی ہے ملاقات میں   پاکستان میں سرمایہ کاری کے میسر مواقعوں سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ایڈیٹکو کمپنی کے وفد نے وزیر خارجہ کو کمپنی کی پاکستان کے ٹیلی کام سیکٹر میں سرمایہ کاری اور کاروباری حجم کو بڑھانے کے حوالے سے مختلف منصوبوں پر تفصیلی بریفنگ  دی۔ایڈٹکو وفد نے وزیر خارجہ کو بتایا کہ انکی کمپنی کے پاکستان میں تمام بڑے آپریٹرز کے ساتھ، طویل مدتی خدمات کے معاہدے طے ہیں جس میں بنیادی ڈھانچے کی سروسز کا وسیع پورٹ فولیو، آپریشنز اینڈ مینٹینس سروسز اور توانائی کی بچت کے حل کے منصوبے شامل ہیں۔پاکستان ہمارے لئے ایک اہم مارکیٹ ہے اور ہم پاکستان میں ٹیلی کمیونیکیشن کے شعبے کو فروغ دینے کے لئے جدید بنیادی ڈھانچے کے حل کو متعارف کروانے کا عزم رکھتے ہیں۔

شاہ محمودقریشی 

مزید : صفحہ اول