زرعی قرضے ایک ٹریلین سے تجاوز کر چکے،سٹیک ہولڈرز معیار اور مقدار میں بہتری لائیں:گورنر سٹیٹ بینک

زرعی قرضے ایک ٹریلین سے تجاوز کر چکے،سٹیک ہولڈرز معیار اور مقدار میں بہتری ...

  



کراچی (این این آئی) گورنر سٹیٹ بینک نے سٹیک ہولڈرز کی حوصلہ افزائی کی ہے کہ وہ پاکستان کے زرعی شعبے کو قرضوں کی فراہمی کے معیار اور مقدار میں بہتری لائیں۔ رضا باقر نے زراعت کے شعبے کو قرضوں کی فراہمی میں اضافے کے لیے کوششیں کرنے پر بینکوں کی تعریف کی جو مالی سال 19 کے اختتام تک تاریخی لحاظ سے بلند ترین سطح تک پہنچ گئے ہیں۔ گورنر اسٹیٹ بینک نے اپنے کلیدی خطاب میں کہا، پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ زرعی شعبے کے قرضے ایک ٹریلین روپے سے تجاوز کر چکے ہیں۔ انہوں نے یہ بات زرعی قرضہ مشاورتی کمیٹی (اے سی اے سی)کے پشاور، خیبرپختونخوا میں منعقد ہونے والے سالانہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ یہ اجلاس سٹیٹ بینک کی جانب سے ملک کے پسماندہ صوبوں اور علاقوں میں زرعی قرضہ بڑھانے کی مسلسل کوششوں کا حصہ ہے۔تاہم ڈاکٹر رضاباقر نے بینکوں پر زور دیا کہ وہ زرعی قرضوں کے متعلق اسٹیٹ بینک کی تزویراتی تبدیلی اور اہم پالیسی اقدامات کی روشنی میں دیے گئے اہداف کے معیاری پہلووں کے حصول کیلئے کوششوں میں اضافہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ بیشتر بینکوں نے اپنے مقررہ اہداف حاصل کر لیے لیکن زیڈ ٹی بی ایل، پی سی بی ایل، کچھ ملکی نجی اور اسلامی بینکوں نے ہدف سے کم قرضے تقسیم کیے۔ تمام صوبوں اور علاقوں میں زرعی قرضوں کی صوبہ وار تقسیم میں دوہندسی نمو ہوئی تاہم بینکوں کو پسماندہ علاقوں میں اپنے مقررہ اہداف حاصل کرنے کے لیے سخت محنت کرنا پڑی۔ انہوں نے زرعی قرضے دینے والے بینکوں اور اداروں پر زور دیا کہ وہ پسماندہ صوبوں اور علاقوں میں زرعی قرضے کے اہداف کا حصول یقینی بنانے کے لیے اپنی ذمہ داریوں اور کوششوں میں اضافہ کریں۔گورنر نے کمیٹی کو آگاہ کیا کہ اسٹیٹ بینک زرعی شعبے میں مالی شمولیت کو مزید فروغ دینے کے لیے تین اہم پالیسی اقدامات پر غور کر رہا ہے۔ اول، زرعی قرضوں کی فراہمی، جغرافیائی تقسیم، واجب الادا رقم، قرض گیروں کی تعداد اور زرعی قرضے کے انفراسٹرکچر پر مشتمل ماہانہ بنیادوں پر بینک وار کارکردگی کے اعدادوشمارظاہر کر کے اس کی شفافیت میں اضافہ کرنا ہے۔ دوم، زرعی قرضوں کے اہم اظہاریے اور اہداف پر مبنی بینکوں کی درجہ بندی کے لیے ایک جامع اسکورنگ ماڈل متعارف کرانا۔ سوم، بینکوں کی کارکردگی کے اسکور کی بنیاد پر ترغیبات اور جرمانے متعارف کرانا۔ 

گورنر سٹیٹ بنک

مزید : صفحہ اول