پشاور، کسان مزدور تحریک کا کسانوں کو بید خل کرنے کیخلاف احتجاجی مظاہرہ 

        پشاور، کسان مزدور تحریک کا کسانوں کو بید خل کرنے کیخلاف احتجاجی ...

  



 پشاور (سٹی رپورٹر)پاکستان کسان مزدور تحریک نے ہریانہ بالا  پشاور میں کسانوں کو زمینوں سے  زبردستی بے دخل کرنے کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ سڑک کے تعمیر سے متاثر ہ کسانوں کو متابدل زمین اور گھروں کے تعمیر کیلئے رقوم براہ راست کسانوں کو دینے سمیت کھیتی باڑی کیلئے زرعی زمین دی جائے بصورت دیگر اپنا احتجاجی تحریک چلائنگے۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جس پر حکومت مخالف نعرے درج تھے۔مطاہرے کی قیادت لعل جان،رحمان،سردار آصف اور دیگر ساتھیوں نے کی۔اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ نادرز بائی پاس کی تعمیر سے ہریانہ بالا متعدد دیہات اس سے متاثر ہوئے ہے جنمیں گاوں گڑھی بجار،چولی بالا،چولی پایان،مترا،گڑھی ولی محمد،اور دیگر دیہات شامل ہے جہاں کسانوں کو گھروں اور زرعی زمینوں سے زبردستی بے دخل کیا گیا اور انکے مکانات کو مسمار کیا گیا جبکہ کوئی معاوضہ بھی نہیں دیا گیا ہے جسکی وجہ سے سینکروں کسانوں کے خاندان دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہے۔انہوں نے کہا کہ کسانوں کے بے دخلی کے خلاف کہی بار اپنا احتجاج بھی ریکارڈ کیا مگر التا پولیس والوں ن کسانوں کے گھروں پر چھاپے مار کر گرفتار کیا اور انکے خاندان والوں کو حراساں کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ کسانوں کے زرعی زمین اور گھروں کے بدلے جو رقوم محتص ہوئے تھے وہ بھی علاقہ کے خان وخوانین نے ہڑپ کیے۔انہوں نے  صوبائی حکومت  سے مطالبہ کیا ہے کہ  نادرن بائی پاس سے متاثرہ کسانوں کو معاوضہ دے  تاکہ وہ اپنے گھر تعمیر کر سکے جبکہ کھیتی باڑی کیلئے متبادل زمین دینے کے ساتھ اقتصادی زون کی وجہ سے کسانوں کے معاشی قتل و عام کو روکنے کیلئے اقدامات کریں بصورت دیگر احتجاجی تحریک چلائنگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر