صوابی،طالبات کا مطالبات منوانے کیلئے کلاسوں کا بائیکاٹ جاری

صوابی،طالبات کا مطالبات منوانے کیلئے کلاسوں کا بائیکاٹ جاری

  



صوابی(بیورورپورٹ) وومن یونیورسٹی صوابی کی طالبات نے اپنے طالبات منوانے کے لئے کلاسز سے بائیکاٹ منگل کے دوسرے روز بھی جاری ہے۔ اس موقع پر طالبات نے نعرے بازی کی جب کہ طالبات کو منتشر کرنے کے لئے سیکیورٹی گارڈ نے تشدد کیا جب کہ طالبات نے الزام لگایا کہ اس موقع پر ہمیں اہلکاروں نے تھپڑ مارے جب کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے موقف اختیار کیا کہ یونیورسٹی کی گاڑی کو راستہ نہ دینے پر جب طالبات کو سیکیورٹی گارڈ نے ہٹانے کی کوشش کی تو انہوں نے گارڈ پر پتھر مارے۔ان طالبات کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے قابل اور پی ایچ ڈیز ماہر اساتذہ کو یونیورسٹی سے فارغ کر کے ہمارے مستقبل کو داؤ پر لگا دیا ان کو فارغ کرنے کی بجائے یونیورسٹی میں اساتذہ کی کمی کو پور اکیا جائے انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے ہمیں دھمکی دی ہے کہ اگر اپنے مطالبات کو منوانے کے لئے جاری ہڑتال کر ختم نہ کیا تو ان کی ڈگریاں منسوخ کی جائے گی۔ جب کہ طالبات کا کہنا تھا کہ پہلے سے ہی یونیورسٹی ہذا میں اساتذہ کی کمی ہے جب کہ اوپر سے انتظامیہ ہمارے قابل اور پی ایچ ڈیز اساتذہ کو فارغ کر رہی ہے جس سے ہمارا تعلیمی کیریئر خراب ہو سکتا ہے۔ انتظامیہ نے بغیر کسی وجہ اور نوٹس کے ان اساتذہ کو فارغ کر کے نہ صرف اساتذہ بھی سٹوڈنٹس کے ساتھ بھی زیادتی کی ہے اس لئے ہمارا مطالبہ ہے کہ ان اساتذہ کو بحال کیا جائے تاکہ ہمارا مستقبل تاریک ہونے سے بچ سکے#

مزید : پشاورصفحہ آخر