ڈبلیوایس ایس سی بھی ٹی ایم اے کے نقش قدم پر گا، مزن عنایت اللہ آفریدی 

  ڈبلیوایس ایس سی بھی ٹی ایم اے کے نقش قدم پر گا، مزن عنایت اللہ آفریدی 

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) سابقہ ناظم ملک عنایت اللہ آفریدی نے اپنے ایک بیان میں ڈبلیو ایس ایس سی پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ڈبلیو ایس ایس سی کوھاٹ بھی ٹی ایم اے کے نقش قدم پر چل پڑا ہے عوام سے لاکھوں روپے ماہانہ پانی کا بل وصول کرنے والا ادارہ بوسیدہ پائپ لائنز کو تبدیل کرنے کے بجائے موٹر سائیکل یا سائیکل کی پراٹی ٹیوب لگا کر جان چھڑانے کی کوشش کرتے ہیں یہی کام ٹی ایم اے کے دور میں بھی ہوتا تھا انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تین سالوں میں ڈبلیو ایس ایس سی اپنا سسٹم ٹھیک نہ کر سکی صفائی کے حوالے سے بھی ان کا کہنا تھا کہ جس طرح ابتدائی دنوں میں بڑھ چڑھ کر صفائی کی جاتی تھی اب صفائی کا بھی وہ معیار نہیں رہا ملک عنایت اللہ آفریدی نے چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا‘ سیکرٹری بلدیات اور کوھاٹ سے منتخب ممبران اسمبلی سے اپیل کی کہ وہ ڈبلیو ایس ایس سی کے ساتھ کنٹریکٹ ختم کرے کیوں کہ اس وقت عملی طور پر ڈبلیو ایس ایس سی کو چلانے والے صرف اور صرف ٹی ایم اے سے آئے اہلکاران میں گزشتہ تین سالوں میں اس کمپنی نے نہ تو صفائی کے لیے سٹاف کی ضرورت اور وعدوں کے مطابق بھرتی کی اور نہ پینے کے صاف پانی کی لائنوں کو تبدیل کیا جا سکا البتہ دکھاوے کے لیے غیر ضروری افسران کی ایک ٹیم بھرتی کر رکھی ہے جو ہفتے میں ایک آدھ بار کوھاٹ چائے پینے کے لیے آتے ہیں لہٰذا قومی خزانے کو مزید نقصان پہنچانے سے بہتر ہے کہ صفائی اور واٹر سپلائی کی ذمہ داری واپس ٹی ایم اے کے حوالے کر دی جائے۔ 

مزید : پشاورصفحہ آخر