کے پی کے،ترقیاتی فنڈز کی غیر منصفانہ تقسیم،اپوزیشن جماعتوں کا ویزر اعلیٰ ہاؤس کے سامنے دھرنا

کے پی کے،ترقیاتی فنڈز کی غیر منصفانہ تقسیم،اپوزیشن جماعتوں کا ویزر اعلیٰ ...

  



پشاور(این این آئی)خیبرپختونخوا اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے ترقیاتی فنڈزکی غیرمنصفانہ تقسیم کے خلاف سی ایم ہاؤس کے سامنے دھرنا دیا،دھرنے میں اے این پی،جے یوآئی،مسلم لیگ ن،پیپلزپارٹی اورجماعت اسلامی کے اراکین نے شرکت کی۔وزیراعلی محمودخان سے ملاقات اورمسائل حل کرنے کی یقین دہانی پر اپوزیشن نے اپنا احتجاجی دھرنا ختم کردیا۔منگل کے روز صوبائی اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے وسائل کی غیرمنصفانہ تقسیم کے خلاف وزیراعلی ہاؤس کے سامنے دھرنا دیا،دھرنے میں عوامی نیشنل پارٹی،پیپلزپارٹی،مسلم لیگ ن اورجے یوآئی کے اراکین نے شرکت کی،اپوزیشن اراکین کاکہنا تھا کہ وزیراعلی اپنے من پسند اراکین میں ترقیاتی فنڈز تقسیم کرکے اپوزیشن اراکین کونظرانداز کررہے ہیں،ترقیاتی فنڈز پر سب کابرابر کاحق ہے اورہم اپنا حق لیکر رہیں گے،بعدازاں اپوزیشن اراکین سردارحسین بابک،نگہت اورکزئی،عنایت اللہ خان اورخوشدل خان سے ملاقات ہوئی،ملاقات کے دوران وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی وزیرقانون سلطان محمد اوروزیرخوراک قلندرلودھی بھی موجود تھے،ملاقات کے دوران اپوزیشن کے مسائل حل کرنے کی یقینی کی گئی جس کے بعد احتجاج ختم کردیاگیا۔میڈیا سے گفتگو میں اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک کاکہنا تھا کہ ہم ترقیاتی فنڈز کی منصفانہ تقسیم چاہتے ہیں، حکومت نے وسائل کی منصفانہ تقسیم کی یقین دہانی کرائی ہے، وزیراعلی نے صوبائی وزراء پر مشتمل کمیٹی بھی تشکیل دیدی ہے، کمیٹی میں شوکت یوسفزئی،قلندر لودھی،اکبر ایوب اور سلطان محمد شامل ہیں۔ حکومت نے یقین دہانی کرائی ہے کہ اپوزیشن ارکان کو ترقیاتی فنڈز کی تقسیم میں نظر انداز نہیں کیا جائے گا۔ وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت اوراپوزیشن ملکرکام کرے گی، ہم سب صوبہ کی ترقی چاہتے ہیں، اب اسمبلی میں بھی ماحول اچھاہوگا، اپوزیشن اراکین کوان کاجائز حق ملے گایہ جمہوریت کاخاصہ ہے کہ مل بیٹھ کربات کی جائے۔ قانون سازی کے عمل میں بھی اپوزیشن کواعتماد میں لیاجائیگا۔

اپوزیشن دھرنا

مزید : صفحہ اول