کیوں نہ ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو نوکری سے نکال دیں، ہم نے صرف 2 لائنیں لکھنی ہیںاوراس نے ۔۔۔سپریم کورٹ کے لیڈی ہیلتھ ورکرز سے متعلق کیس میں اہم ریمارکس

کیوں نہ ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو نوکری سے نکال دیں، ہم نے صرف 2 لائنیں ...
کیوں نہ ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو نوکری سے نکال دیں، ہم نے صرف 2 لائنیں لکھنی ہیںاوراس نے ۔۔۔سپریم کورٹ کے لیڈی ہیلتھ ورکرز سے متعلق کیس میں اہم ریمارکس

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ میں لیڈی ہیلتھ ورکرز سے متعلق کیس میں جسٹس گلزاراحمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کیوں نہ ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو نوکری سے نکال دیں، ہم نے صرف 2 لائنیں لکھنی ہیں اور اس نے نوکری سے فارغ ہوجانا ہے، ذوالفقارعلی دھاریجو کیخلاف ایف آئی آر درج کروا کے شام تک گرفتار کرالیتے ہیں،یہ لیڈی ہیلتھ ورکرز کو رات کے وقت دفتر بلاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں لیڈی ہیلتھ ورکرز سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی،سندھ میں لیڈی ہیلتھ ورکرزکے انچارج ڈاکٹرذوالفقارعلی دھاریجو نے عدالت میں بیان حلفی جمع کرادیا، بیان حلفی میں کہا گیاہے کہ کسی لیڈی ہیلتھ ورکر کو دفتری اوقات کے بعد نہیں بلایا، خواتین کےساتھ ہراسگی کا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا۔

جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ کیوں نہ ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو نوکری سے نکال دیں، ہم نے صرف 2 لائنیں لکھنی ہیں اور اس نے نوکری سے فارغ ہوجانا ہے،جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ ذوالفقارعلی دھاریجو کیخلاف ایف آئی آر درج کروا کے شام تک گرفتار کرالیتے ہیں،یہ لیڈی ہیلتھ ورکرز کو رات کے وقت دفتر بلاتا ہے۔

ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ عدالتی آبزرویشن سے ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کا کیریئرداغدار ہوجائے گا،جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ آپ کو معلوم ہوجائے گا کہ سرکاری نوکری کیا ہوتی ہے، آپ پھر ہر کام کریں گے ماسوائے سرکاری کام کے، ذوالفقارعلی دھاریجو صاحب آپ ہمیشہ کیلئے توبہ کرلیں۔

ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے کہا کہ ڈاکٹرذوالفقار کا تبادلہ ہوچکا، ان کا لیڈی ہیلتھ ورکرزسے کوئی تعلق نہیں رہا، ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام کا انچارج لگا دیا ہے، عدالت نے استفسار کیا کہ ہیپاٹائٹس پروگرام میں ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کے ساتھ کوئی خاتون نہیں ہوگی، عدالت نے کہاکہ ذوالفقارعلی دھاریجو مستقبل میں محتاط رہیں، عدالت کو ہراسگی سے متعلق کسی قسم کی شکایت موصول نہ ہو، عدالت نے ڈاکٹر ذوالفقارعلی دھاریجو کو وارننگ دیتے ہوئے سماعت غیرمعینہ مدت کیلئے ملتوی کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد