تعلیمی اداروں میں والدین کی شکایات، ازالہ کیلئے شکایات سیل بنانیکا حکم 

تعلیمی اداروں میں والدین کی شکایات، ازالہ کیلئے شکایات سیل بنانیکا حکم 

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے صوبہ بھر کے سرکاری تعلیمی اداروں میں ضلعی سطح پر والدین کی شکایات کے ازالہ کے لئے شکایات سیل بنانے کا حکم دے دیا، سکول کونسلز نہ بنانے خلاف دائردرخواست پرمسٹر جسٹس شاہد جمیل خان نے مزید حکم دیاہے کہ سرکاری تعلیمی اداروں کی سکول کونسل میں والدین کی شمولیت کو بھی یقینی بنایا جائے،عدالت نے فضل احمد سمیت متعدد شہریوں کی درخواست پر پنجاب حکومت اور محکمہ تعلیم سے سکول کونسل سمیت دیگر متعلقہ امور کے بارے میں رپورٹ مرتب کرکے آئندہ سماعت پر پیش کرنے کی ہدایت کی ہے،گزشتہ روز سیکرٹری سکولز ارم بخاری اورسی ای او ایجوکیشن زاہد پرویز عدالت میں پیش ہوئے،انہوں نے سکولز کونسلر نہ بنانے والے نجی تعلیمی اداروں کے خلاف کارروائی کے بارے میں رپورٹ پیش کی،عدالت کو بتایا گیا کہ سکولز کونسل نہ بنانے پر 40 سکولوں کی رجسٹریشن منسوخ اور 10 سکولوں کو 6 لاکھ روپے جرمانہ کیاگیا،نیب کے پراسیکیوٹر کی طرف سے رپورٹ پیش کی گئی کہ بے ضابطگی کے معاملے پر نیب نے محکمہ تعلیم کے 37  افسروں و اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا ہے،فاضل جج نے سیکرٹری تعلیم سکولز کو ہدایت کی کہ والدین کی شکایات کا ازالہ کرنے کے لئے کوئی میکنیزم تیار کیا جائے،آپ اس سسٹم کو سینٹرلائز ڈکیوں نہیں کرتے؟سکول کونسل سمیت دیگر امور کی نگرانی کے لئے اعلی سطح افسر کو مقرر کریں، فاضل جج نے مذکورہ ہدایات کے ساتھ کیس کی مزیدسماعت ملتو ی کردی۔

والدین،شکایات

مزید : صفحہ آخر