ہائیکورٹ نے نجی میڈیکل کالجوں کو 2020.21ء کیلئے داخلوں کی اجازت دیدی

  ہائیکورٹ نے نجی میڈیکل کالجوں کو 2020.21ء کیلئے داخلوں کی اجازت دیدی

  

  لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس جواد حسن نے 2020-21ء کے لئے نجی میڈیکل کالجوں کو داخلے کی اجازت دے دی،عدالت عالیہ نے پاکستان ایسوسی ایشن آف میڈیکل اینڈ ڈینٹل انسٹی ٹیوشنز کی درخواست پر 6 صفحات پر مشتمل فیصلہ جاری کردیاہے،عدالت نے پرائیویٹ میڈیکل انسٹی ٹیوشنز اور پاکستان میڈیکل کمیشن کے معاہدے کی روشنی میں درخواست نمٹاتے ہوئے قرار دیا کہ پرائیویٹ کالج صرف2020-21ء کے لئے داخلے کر سکتے ہیں  عدالت نے ہدایت کی کہ میرٹ پر آنے والے طلبہ کی فہرست پی ایم ڈی سی کو بھجوائی جائے گی،نجی میڈیکل کالجز 15 فروری تک داخلے کا عمل مکمل کریں گے،15فروری کے بعدخالی رہ جاے والی نشستوں پر7روز میں داخلے مکمل کئے جائیں گے، عدالت نے یہ حکم بھی دیا ہے کہ کالج فروری تک. داخلے کا عمل مکمل کریں اور طلباء فیس براہ راست کالجوں کو ادا کریں گے،عدالت نے پاکستان میڈیکل کمیشن کو طلباء کے داخلوں سے متعلق قواعد میں ترمیم کرنے کا حکم دیتے ہوئے قراردیا کہ طلباء کے مستقبل کو محفوظ بنانے کیلئے داخلہ قواعد میں ضروری ترمیم کرنا بہترین راستہ ہو گا، عدالت نے فریقین کے درمیان معاہدہ کی شرائط کو تحریری فیصلہ کاحصہ بناتے ہوئے قراردیا کہ میڈیکل کالجز میں داخلوں کے لئے مستقبل کیلئے کوئی سنٹرل انڈکشن سسٹم نہیں ہو گا،پی ایم سی کا آٹومیٹڈ سسٹم مستقبل میں طلباء کے داخلوں کے لئے استعمال نہیں ہو گا، پی ایم سی کا پورٹل صرف جنوری 2021 ء سیشن کے لئے استعمال ہو گااورپی ایم سی آٹومیٹک سسٹم کے ساتھ آن لائن داخلہ پورٹل قائم رکھے گا، طلباء پرائیوٹ میڈیکل کالجوں میں داخلے کے لئے آن لائن پورٹل کے ذریعے ایف ایس سی اور میٹرک کے نمبرز درج کر سکیں گے، میڈیکل کالج میں داخلے کے امیدوار طلباء اپنی مرضی سے کالجوں کا انتخاب کر سکیں گے، طلباء پی ایم سی کے پورٹل کے ذریعے درخواست جمع کروانے کی 5 سو روپے فیس ادا کریں گے، پاکستان میڈیکل کمیشن امیدوار طلباء کا ٹیسٹ لے گا اور داخلے کے لئے 50 فیصد نمبر کا تعین کرے گا، میڈیکل کالجوں میں داخلوں کے لئے  طلباء کے 30 فیصد نمبر ایف ایس سی کی بنیاد پر مقرر کئے جائیں گے جبکہ20 فیصد نمبر طلباء کے انٹرویو کیلئے مقرر کئے گئے ہیں،  پی ایم سی یکم جنوری 2021 ء کو تمام کالجز کو طلباء کی فہرستیں بھجوانے کا پابند ہو گا، تمام پرائیویٹ و سرکاری کالجز داخلوں کے لئے طلباء کے انٹرویو خود کریں گے، پرائیویٹ و سرکاری کالجز 25 نومبر 2020 ء سے قبل طلباء کی اطلاع کیلئے انٹرویو کا سٹرکچر ویب سائٹس پر اپ لوڈ کریں گے،کالجز میرٹ پر آنے والے میڈیکل کے طلباء کی حتمی فہرستیں پاکستان میڈیکل کمیشن کو بھجوانے کے پابند ہوں گے، عدلت نے حکم دیا کہ تمام میڈیکل کالجز میں 15 فروری 2021 ء تک داخلوں کا پراسس مکمل کیا جائے، کوئی بھی میڈیکل کالج ایسے طالب علم کا داخلہ کرنے کی کوشش نہ کرے جس کا نام پاکستان میڈیکل کمیشن کی لسٹ میں شامل نہ ہو، میڈیکل کالجز 15 فروری 2021 ء کے بعد خالی رہ جانے والی سیٹیں 7 روز میں مکمل کر سکیں گے، طلباء میڈیکل کالجز کے جاری کردہ اشتہار کے مطابق پیشگی فیس براہ راست متعلقہ کالج کو ادا کریں گے، میڈیکل کالجز حتمی داخلہ فہرست اپنی ویب سائٹس پر شائع کرنے کے پابند ہوں گے، عدالت نے مزید ہدایت کی کہ میڈیکل کالجز طلباء کے داخلوں کی حتمی فہرستیں الحاق شدہ یونیورسٹیز کو بھی بھجوائی جائیں، یونیورسٹیز طلباء کی تعلیمی اسناد کی تصدیق کے بعد طلباء کی داخلوں کی حتمی فہرستیں پی ایم سی کو بھجوانے کی پابند ہوں گی۔

داخلوں کی اجازت

مزید :

صفحہ آخر -