عدالت کا شہبازشریف، حمزہ کو بلٹ پروف گاڑیوں میں پیش کرنے کا حکم 

  عدالت کا شہبازشریف، حمزہ کو بلٹ پروف گاڑیوں میں پیش کرنے کا حکم 

  

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج جوادالحسن نے منی لانڈرنگ ریفرنس میں گرفتار میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو بکتر بند گاڑیوں میں پیش کرنے سے روکتے ہوئے انہیں بلٹ پروف گاڑیوں میں عدالت میں پیش کرنے کاحکم دے دیاہے،عدالت نے میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی بکتر بند گاڑیوں میں عدالت پیشی کے خلاف درخواستوں کی سماعت کی،درخواست گزاروں کا موقف تھا کہ وہ کمر درد میں مبتلا ہیں،اس کے باوجود انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے دوران سماعت ایڈیشنل ہوم سیکرٹری اور ایس پی سیکیورٹی عدالت میں پیش ہوئے اور رپورٹ جمع کرائی جس میں بتایا گیا کہ شہباز شریف کی جان کو خطرے کے باعث بکتر بند گاڑیوں میں پیش کیا جاتا ہے،فاضل جج نے استفسار کیا کہ ملزموں کو بْلٹ پروف گاڑی فراہم کرنے کا اختیار کس کے پاس ہے؟ جس پر ایس پی سیکیوٹری نے کہا کہ سی سی پی او کے خط پر ہوم ڈیپارٹمنٹ گاڑی فراہم کرسکتا ہے، عدالت نے دلائل سننے کے بعد مذکورہ دونوں ملزموں کو بلٹ پروف گاڑیاں فراہم کرنے کا حکم دے دیاہے،شہباز شریف کے وکیل کا موقف تھا کہ میاں شہباز شریف کی کمر کی تکلیف میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے جیل حکام بکتر بند گاڑی میں پیش کرتے ہیں جس سے مزید مسائل پیدا ہو رہے ہیں،میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو منی لانڈرنگ ریفرنس میں 26 نومبر کو احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

بکتربند گاڑیاں 

مزید :

صفحہ اول -