ضلعی انتظامیہ کرونا چین توڑنے کیلئے سرگرم، ملتان: حکومت سے تعاون نہ کرنیوالی لیبارٹریاں سیل، محکمہ صحت کی حتمی وارننگ 

        ضلعی انتظامیہ کرونا چین توڑنے کیلئے سرگرم، ملتان: حکومت سے تعاون نہ ...

  

 ملتان (سپیشل رپورٹر‘ وقائع نگار)  عالمی وباء کی بڑھتی ہوئی شدت روکنے کے لئے ضلعی انتظامیہ کی ملتان میں کورونا چین توڑنے کی بھرپور کوششیں جاری ہیں جب کہ محکمہ صحت کے حکام بھی لاہور سے ہنگامی طور پر ملتان پہنچ گئے ہیں۔ ضلعی انتظامیہ نے پرفیکٹ ڈیٹا حاصل کرنے کے لئے نجی میڈیکل لیبارٹریز کے مالکان کا اجلاس گزشتہ روز طلب کیا،جس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز رانااخلاق احمد خان، ہدایت اللہ خان اور(بقیہ نمبر1صفحہ 6پر)

 ڈپٹی سیکرٹری ہیلتھ پنجاب عبداللہ خرم نیازی نے شرکت کی،اسسٹنٹ کمشنزعابدہ فرید،محمد زبیر اور مدثر ممتاز،سی ای او ہیلتھ ڈاکٹرارشد ملک،ڈاکٹر علی مہدی اور ڈاکٹرعطاالرحمان بھی موجود تھے،اجلاس میں نجی لیبارٹریز کی طرف سے صحیح ڈیٹا فراہم نہ کرنے پر تشویش کا اظہار کیا گیا اورنجی لیبارٹریوں کی کوتاہی کو غفلت مجرمانہ قرار دے دیا گیا،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ہیڈ کوارٹر نے کہا کہ نجی لیبارٹریوں میں کورونا وائرس کے مریضوں کے صحیح ایڈریس نہیں نوٹ کئے جاتے جس کی وجہ سے محکمہ صحت کورونا مریضوں کو ٹریس نہیں کرپاتا،نجی لیبارٹریوں کے اس رویہ کی وجہ سے کورونا وائرس کے کیسز کے بڑھ رہے ہیں،ڈپٹی سیکرٹری ہیلتھ پنجاب عبداللہ خرم نیازی نے کہا کہ انتظامیہ کا کورونا مریضوں کا صحیح ڈیٹا فراہم نہ کرنا کریمنل ایکٹ کے زمرے میں آتا ہے،لیبارٹریوں کی انتظامیہ اس غفلت کی وجہ سے کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں،ڈیٹا فراہم نہ کرنے کی وجہ سے کنٹیک ٹریسنگ میں دقت پیش آرہی ہے،عبداللہ خرم نیازی نے کہاکہ اس غفلت کی وجہ سے لیبارٹری انتظامیہ کے خلاف کریمنل کیس شروع کیا جا سکتا ہے،حکومت سے تعاون نہ کرنیوالی لیبارٹریوں کو سیل کر دیاجائے گا،تمام نجی لیبارٹریز کی انتظامیہ محکمہ صحت حکومت پنجاب کے پورٹل پر کورونا مریضوں کا ڈیٹا روزانہ شئیر کرے،کورونا وائرس کے مریض کے سیمپل 6 گھنٹے کے اندر لیبارٹری پہنچانا ضروری ہیں،ڈی ایس ہیلتھ نے مزید کہا کہ ملتان میں کورونا ٹیسٹنگ  کی استعداد میں اضافہ کیا جارہا ہے۔جبکہ پولیس نے کرونا وائرس کے پیش نظر پنجاب حکومت کی جانب سے عائد کردہ پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے پر متعدد افراد کے خلاف مقدمات درج کر لئے ہیں۔پولیس تھانہ پاک گیٹ نے مذہبی اجتماع منعقد کر نے پر سکینہ بی بی،حاجی اشرف،صفدر حسین،نذر حسین،عون عباس کے خلاف مقدمات درج کئے جنہوں نے مذہبی اجتماع کے انعقاد کے  لئے انتظامیہ دے طے شدہ معاہدہ کی خلاف ورزی کی تھی۔اسی تھانے نے حسین آگاہی سے احسان کو گرفتار کیا جس نے 10 بجے کے بعد دکان کھول رکھی اور لوگوں کا ہجوم اکٹھا کیا ہوا تھا۔پولیس لوہاری گیٹ نے گھنٹہ گھر چوک سے مصباح کو گرفتار کیا جس نے پابندی کے با وجود دکان کھول رکھی تھی۔پولیس تھانہ کینٹ نے سیکقرٹی کانسٹیبل کی درخواست پر نذر شاہ کے خلاف مقدمہ درج کیا جس نے قاسم بیلہ میں بغیر اجازت مذہبی اجتماع کا انعقاد کیا تھا۔پولیس مظفر آباد نے سیکورٹی کا نسٹیبل کی درخواست پر اظہر کے خکاف مقدمہ درج کیا جس نے شیرشاہ کے علاقہ میں بغیر اجازت مذہبی ریلی کا انعقاد کیا۔پولیس تھانہ گلگشت نے بغیر اجازت مذہبی ریلی کا انعقاد کرنے پر یسین،قیصر،منظور، الطاف،اور زوار کے خکاف مقدمہ درج کیا۔پولیس تھانہ راجہ رام نے بغیر اجازت مذہبی اجتماع کا انعقاد کرنے اور کرونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے پر صفدر،صدام،اظہر،عاشق،سہیل،فیصل،اور عامر کے خلاف مقدمات درج کئے۔پولیس دہلی گیٹ نے شاہ خرم کے علاقہ میں کاروائی کرتے ہوئے کاشف اور بلال کو گرفتار کیا جنہوں نے پابندی کے باوجود دکانیں کھول رکھی تھیں اور لوگوں کا ہجوم اکھٹا کیا ہوا تھا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -