ملتان سمیت مختلف شہروں میں حادثے‘ 8 افراد جاں بحق 

  ملتان سمیت مختلف شہروں میں حادثے‘ 8 افراد جاں بحق 

  

ملتان‘ رحیم یار خان‘ لیاقت پور‘ مظفر گڑھ‘ شاہ جمال‘ صادق آباد‘ ڈہرکی (وقائع نگار‘ نمائندہ پاکستان‘ نامہ نگار‘ نمائندہ خصوصی) سائیکل اور رکشہ میں تصادم کے نتیجے میں تاجر جاں بحق ہو گیا معلوم ہوا ہے کہ تاجر ذوالفقار اپنی سائیکل پر دکان پر جا رہا تھا کہ اچانک شیل پمپ نزد رام کلی کے قریب تیز رفتار موٹر سائیکل رکشہ نے (بقیہ نمبر35صفحہ 6پر)

ٹکر مار دی جس کی وجہ سے ذوالفقار موقع پر جاں بحق ہو گیا متعلقہ پولیس نے ضروری کارروائی کے بعد لاش ورثاء کے حوالے کر دی ہے۔ تھانہ نیو ملتان کے علاقہ میں دوران ڈکیتی فائرنگ سے زخمی ہو نے والا شہری نشتر ہسپتال میں دم توڑ گیا۔پولیس نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرکے کا روائی شروع کر دی ہے۔تفصیل کے مطابق تھانہ نیو ملتان کے علاقہ منیر آباد میں نامعلوم مسلح شخص ڈکیتی کی نیت سے غلام عباس کے گھر دیوار پھلانگ کر داخل ہوا ایک کمرے کی لائٹ جلائی تو گھر میں سوئے ہوئے 40 سالہ غلام عباس کی آنکھ کھل گئی جس نے گھر میں نامعلوم شخص کو دیکھ کر اسے پکڑ نے کی کو شش کی تو مسلح شخص نے اس پر فائرنگ کردی جس سے یہ زخمی ہو گیا جبکہ مسلح شخص فرار ہوگیا۔غلام عباس کو زخمی حالت میں نشتر منتقل کیا گیا جہاں زخموں تاب نہ لاتے ہوئے غلام عباس زندگی کی بازی ہار گیا۔پولیس نے لاش پوسٹ ما رٹم کے لئے منتقل کرنے کے بعد جائے وقوعہ سے شواہد اکھٹے کرلئے ہیں اور کاروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ بستی فرید مہر ہیڈ علی پور کا رہائشی 5 سالہ ثنا اللہ ہیڈ امین گڑھ کے نزدیک کھیل رہا تھا کہ اچانک پاں پھسل جانے کے باعث نہر آدم صحابہ میں گر کر ڈوب گیا۔ اطلاع ملنے پر ریسکیو عملہ نے موقع پر پہنچ کر ڈوب جانے والے 5 سالہ ثنا اللہ کی نعش کو نہرسے نکال تدفین کیلئے ورثا کے حوالے کردیاہے۔ گورنمنٹ سکول ٹیچر اور موضع ٹانوری کے زمیندار مہر خالد محمود سیال ٹریفک حادثے میں چل بسے‘ وہ گزشتہ شب گیارہ بجے اپنے گھر آرہے تھے کہ فرید شاہ موڑ کے قریب ان کی کار الٹ گئی تھی جس کے نتیجہ میں وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے مرحوم کی نماز جنازہ ان کی آبائی بستی میں ادا کی گئی جس میں سیاسی و سماجی شخصیات عمائدین علاقہ اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ حادثہ کا شدید زخمی تین روز بعد نشتر میں چل بسا۔موضع عیسی بھا بھہ کے رہائشی ملک محمد اسلم بھا بھہ کے بڑے بیٹے اور تحریک منہاج القرآن ضلع مظفرگڑھ کے امیر ڈاکٹرپروفیسر محمد طارق بھابھہ چشتی کے بڑے بھائی تین روز قبل مظفر گڑھ میں موٹر سائیکل ٹریکٹر ٹرالی کیساتھ ٹکرانے سے شدید زخمی ہو گئے جوکہ نشتر ہسپتال کے آئی سی یو وارڈ میں وینٹی لیٹر پر تھے تین روز تک موت و حیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد خالق حقیقی سے جا ملے ہیں۔ دریں اثناء ڈرائیور کو نیند آجانے کے باعث کراچی سے سوات جانے والی مسافر کوچ ٹرالر سے ٹکراگئی تیز رفتاری کے باعث موڑ کاٹتے ہوئے کار بے قابو ہو کر کھائی میں جاگری کار سوار بے قابو ہو کر ٹرالر سے ٹکرا گیا کمسن بچی سمیت 4 جاں بحق 4 شدید زخمی ہوگئے۔ تفصیل کے مطابق پہلاحادثہ موٹر وے ایم فائیو پر مرید شاخ کے نزدیک پیش آیا جہاں کراچی سے سوات جانے والی بس نمبری JC 9440 ڈرائیور کو نیند آجانے کے باعث سامنے جانیوالے ٹرالر نمبری TLE 379 سے ٹکرا گئی جس کے نتیجہ میں کراچی کی رہائشی 6 سالہ ردا اور 26 سالہ نامعلوم زخموں کی تاب نہ لاتے موقع پر ہی دم توڑ گئے جبکہ شدید زخمی ہوجانے والے 4 افراد کو ریسکیو عملہ نے موقع پر ہی طبی امداد فراہم کردی۔ دوسرا حادثہ قومی شاہراہ پر پیش آیا جہاں رحیم یارخان کا رہائشی 35سالہ محمد عمران اپنی کار نمبری RNV 20 پر جارہا تھا کہ نیند آجانے کے باعث کار سامنے جانیوالے ٹرالر نمبری EA 6010 سے ٹکرا گئی جس کے نتیجہ میں کار سوار 35 سالہ محمد عمران زخموں کی تاب نہ لاتے موقع پر ہی دم توڑ گیا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -