پی ڈی ایم کا پشاور  جلسہ، نیکٹا نے تھریٹ الرٹ جاری کردیا

پی ڈی ایم کا پشاور  جلسہ، نیکٹا نے تھریٹ الرٹ جاری کردیا
پی ڈی ایم کا پشاور  جلسہ، نیکٹا نے تھریٹ الرٹ جاری کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پی ڈی ایم کا22 نومبر کو  پشاور  میں جلسہ، نیکٹا نے تھریٹ الرٹ جاری کردیا۔

نجی ٹی وی کے مطابق نیکٹا کی جانب سے  متعلقہ اداروں کو بھیجے گئے مراسلے میں  دہشت گردی کے ممکنہ خطرے کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ کالعدم تحریک طالبان 22نومبر کو پشاور میں دہشت گردی کی کارروائی کی منصوبہ بندی کر رہی ہے،   الرٹ میں کہا گیا ہے کہ د ہشت گردوں کا ٹارگٹ پی ڈی ایم کا جلسہ ہو سکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق  نیکٹا  نے پشاور میں سیکیورٹی سخت کرنے کے لئے متعلقہ اداروں کو مراسلے جاری کر دیے ہیں۔دوسری طرف پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے بھی اپوزیشن کو جلسے کی اجازت دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا کی صورت حال کے پیش نظر پی ڈی ایم کو جلسے کی اجازت نہیں دے سکتے  جبکہ  اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم کے صوبائی قائدین نے کہا ہے کہ پشاور میں جلسہ ہر صورت میں ہوگا،حکومت تصادم کا ماحول بنار ہی ہے، اختیارات کے ناجائز استعمال کرنے والوں کے ساتھ نمٹنا آتا ہے۔

یاد رہے کہ اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پی ڈی ایم کے زیر اہتمام 22 نومبر کو پشاور میں بڑے جلسے کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس میں تمام حکومت مخالف جماعتوں کے مرکزی قائدین خطاب کریں گے ۔یاد رہے کہ گذشتہ ماہ 22 اکتوبر کو بھی تھریٹ الرٹ جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ دہشت گرد تنظیموں کی جانب سے سیاسی ومذہبی شخصیات کودہشت گردی کانشانہ بنایاجاسکتاہے، تحریک طالبان دیگرتنظیموں سےملکرکوئٹہ اورپشاورمیں اعلیٰ سیاسی شخصیات کی ٹارگٹ کلنگ کی منصوبہ بندی کررہی ہے۔ بلوچستان کےعلاقے سےبرآمدہونےوالابارودی موادکوئٹہ اورکےپی میں استعمال ہونےکاخدشہ تھا،کوئٹہ اور پشاور میں خودکش حملےاوربم دھماکےبھی کرائےجاسکتےہیں، نیکٹا نے چاروں صوبوں سمیت گلگت بلتستان آزاد کشمیر کے چیف سیکریٹریز کو اقدامات بارے آگاہ کردیا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -