انتہا پسندی کے خاتمے کیلئے صوفیاء کی تعلیمات عام کرنا ہونگی، طاہر رضا

   انتہا پسندی کے خاتمے کیلئے صوفیاء کی تعلیمات عام کرنا ہونگی، طاہر رضا

  

لاہور(فلم رپورٹر) ڈائریکٹر جنرل اوقاف پنجاب ڈاکٹر طاہر رضا بخاری نے داتا دربار میں ”حضرت سیّد نا غوث اعظمؒ کانفرنس“ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انتہا پسندی اور تشدّد کے خاتمے کے لیے صوفیاء کے اسلوبِ دعوت کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔ فلاحی معاشرے کی تشکیل اور احیائے سنت کے لیے شیخ عبد القادرجیلانیؒ کے افکار سے روشنی حاصل کرنا ہوگی۔ آپؒ کے افکار نے تکریم انسانیت و شرف آدمیت کو سر بلند اور علمی رجحانات کو تقویت عطا کی۔ آپؒسل طریقت کے پیشوا اور مجدّدین و محدثین کے راہنما ہیں۔ آپؒ کے افکار و نظریات نے اخلاق و تصوّف اور دین و طریقت کی آبیاری کی۔ آپؒ کی تعلیمات، خطبات اور فیضِ تربیت نے ملّتِ اسلامیہ کو حیاتِ تازہ سے روشناس کرایا۔ داتا? دربار میں منعقدہ "حضرت سیّدنا غوث اعظم کانفرنس" کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے خطیب داتا  دربار مفتی محمد رمضان سیالوی نے کہا کہ آپؒ نے طریقت کو شریعت کے آئینے میں پیش کر کے عوام الناس کے لیے قابلِ فہم اور آسان راستہ پیدا کیا اور عامتہ المسلمین کو تزکیہ و طہارت کی طرف قائل کیا، آپؒ کا جاری کردہ طریقہ قادریہ پوری دنیا میں فیض رسانی کا ذریعہ ہے۔ دیگر سلاسل بھی آپؒ سے پوری طرح فیض یاب ہیں۔اس موقع پر منیجر داتا دربار شیخ محمد جمیل سمیت دیگر شخصیات موجود تھیں۔ مقررین نے حضرت شیخ عبد القادرجیلانیؒ پیران ِ پیر کی بارگاہ میں زبردست خراج تحسین پیش کیا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -