افغانستان، اغوا کاروں کی قید میں موجود 2 مغوی ہلاک

افغانستان، اغوا کاروں کی قید میں موجود 2 مغوی ہلاک

  

کابل(شِنہوا)افغانستان کے شمالی صوبہ بلخ میں اغوا کے الگ الگ واقعات میں مبینہ طور پر 2 مغوی افراد کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔مقامی آن لائن خبر رساں ایجنسی خامہ پریس نے متعدد ذرائع کے حوالے سے جمعہ کے روز بتایا کہ بلخ کے دارالحکومت مزارشریف کے علاقہ نو آباد سے تقریبا 2 ماہ قبل اغوا ہونیوالے فزیوگرافسٹ اور نیورولوجسٹ ڈاکٹر نادر علیمی جمعرات کو اغوا کاروں کی قید میں جان کی بازی ہار گئے ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ معروف معالج طویل عرصے سے بلخ کے صوبائی ہسپتال میں کام کر رہے تھے۔مقامی ذرائع کے مطابق ہفتے کے آخر میں بلخ سے اغوا ہونیوالے مولانا پرائیوٹ یونیورسٹی کے سربراہ چانسلر محمد ظریف انواری مزار شریف میں اپنے گھر کے نزدیک مردہ حالت میں پائے گئے ہیں۔یہ اطلاعات طالبان کی نگران حکومت کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کے اس بیان کے چند دن بعد سامنے آئی ہیں جس میں کہا گیا تھا کہ حال ہی میں ملک میں اغوا کے واقعات  کی سطح میں کمی آئی ہے۔ذبیع اللہ مجاہد کے مطابق اگست کے وسط میں طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد سے 80 سے زیادہ اغوا کاروں کو گرفتار کیا گیا ہے اور 12 مغویوں کو رہا کرایا گیا ہے۔

مغوی ہلاک

مزید :

صفحہ آخر -