سروس پرموجودمعذور سرکاری ملازمین کے بچوں کی معطلی کا نوٹیفکیشن معطل  تنخواہوں کی مکمل ادائیگی کا حکم 

 سروس پرموجودمعذور سرکاری ملازمین کے بچوں کی معطلی کا نوٹیفکیشن معطل ...

  

 لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے دوران سروس معذور سرکاری ملازمین کے بچوں کی نوکریوں پرعدم تعیناتی کیخلاف دائردرخواست پرسروس پرموجودمعذور سرکاری ملازمین کے بچوں کی معطلی کا نوٹیفکیشن معطل کرتے ہوئے تنخواہوں کی مکمل ادائیگی کا حکم دے دیاعدالت نے آئندہ سماعت پرحکومت پنجاب سے تفصیلی جواب بھی طلب کرلیا،دوران سماعت فاضل جج نے مبہم جواب دینے پرعدالت کا سرکاری وکیل پربرہمی کا اظہارکیا،درخواست گزاروں کے وکیل زبیرکنڈی نے عدالت میں موقف اختیارکیا کہ دوران سروس معذورسرکاری ملازمین کے بچوں کو تعینات نہیں کیا جارہا درخواست گزار کے جن بچوں کو نوکریوں پررکھا گیا ان کاعہدہ بدل کر تنخواہیں روک لی گئیں معذور سرکاری ملازمین کے بچے میرٹ پرپورا اترتے ہیں سیاسی تعیناتیوں کیلئے قانون اور میرٹ کی دھجیاں بکھیر جارہی ہیں عدالتی فیصلے درخواست گزاروں کے حق میں موجود ہیں حکومت کی انٹراکورٹ اپیل مسترد ہوچکی ہے۔

نوٹیفکیشن معطل

مزید :

صفحہ آخر -