سینیٹ میں اپوزیشن کے مینڈیٹ کو بلڈوز کیا گیا،میاں افتخار

        سینیٹ میں اپوزیشن کے مینڈیٹ کو بلڈوز کیا گیا،میاں افتخار

  

چکدرہ(تحصیل رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ سینیٹ میں اکثریت نہ ہونے پر حکومت نے مشترکہ اجلاس میں اپوزیشن کے مینڈیٹ کو بلڈوز کیا،  حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے غریب عوام خودکشیوں پر مجبور ہو رہے ہیں،  اسمبلی کے فلور پر پوری اپوزیشن ایک پیج پر ہے، عمران خان ملک اور جمہوریت کی قیمت پر اپنے اقتدار کو طول دے رہے ہیں، ملک کی بقاء اس حکومت کے خاتمے میں ہے، اسمبلی میں ان ہاؤس تبدیلی، نگران حکومت کی تشکیل اور نئے انتخابات کے تجاویز زیر غور ہیں، ملاکنڈ میں مجھ پر  حملے کی کوشش کی تحقیقات ہونی چاہئے ان خیالات کا اظہار انہوں نے چکدرہ میں مقامی صحافیوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا،میاں افتخار حسین نے کہا کہ ہماری بھی خواہش ہے کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو بھی ووٹ کا حق ملے لیکن اس میں حکومت کی بد نیتی شامل ہے کیونکہ حکومت کو معلوم ہے کہ ملک میں بے تہاشا مہنگائی اور بے روز گاری کی وجہ سے انہیں اگلے الیکشن میں ووٹ نہیں ملیں گے اس لئے اس بار  وہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں سے دھاندلی کے ذریعے ووٹ لینے کی کوشش کرینگے، ملک کے اندر اعتماد کا فقدان ہے اور صاف و شفاف الیکشن نہیں ہورہے تو بیرون ملک کیسے ہوسکتا ہے، کلبوشن یادیو کو بین الاقوامی دباؤ پر فیئر ٹرائل کا موقع فراہم کرنے سے پہلے پاکستانیوں کو فیئر ٹرائل کی سہولت دی جائے، کیا علی وزیر کو اسمبلی اجلاس مٰن بلانے کیلئے پراڈکشن آرڈر جاری کیا گیا؟عمران خان کو اپنی ناہلی کی وجہ سے اداروں کی بھی اب وہ حمایت حاصل نہیں رہی جو پہلے تھی اس لئے جو قوانین وہ اپنے فائدے کیلئے بنا رہے ہیں وہ ان ہی کے گلے پڑینگے، میاں افتخار حسین نے ملاکنڈ میں ان پر حملے کی کوشش کے حوالے سے کہا کہ انہیں بتایا گیا ہے کہ حلمے کی کوشش کرنے والا شخص مجذوب ہے لیکن یہ تحقیقات ہونی چاہئے کہ انہیں پستول کس نے دیا؟ انہیں مجھ پر پستول تاننے کا کس نے کہا؟ کون اسے یہاں لایا؟ اگر خدانخواستہ انہیں کچھ ہوتا تو پھر کیا ہوتا؟ کیا کہا جاتا کہ ایک مجذوب نے فائرنگ کی؟ اس طرح تو پورا باب ہی بند ہوتا اسلئے وہ سمجھتے ہیں کہ اس واقعے کی مکمل تحقیقات ہونی چاہئیے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -