سموگ کیس، چیف ٹریفک پولیس آفیسر کا تبادلہ کرنے سے روک دیا

 سموگ کیس، چیف ٹریفک پولیس آفیسر کا تبادلہ کرنے سے روک دیا

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس شاہد کریم نے سموگ سے متعلق کیس میں چیف ٹریفک پولیس آفیسر کا تبادلہ کرنے سے روکتے ہوئے مئیر لاہور کرنل ریٹائرڈ مبشر اور چیف آفیسر میٹروپولیٹن کارپوریشن کو 21نومبر کو طلب کرلیا عدالت کا روزانہ کی بنیاد پر سموگ سے متعلق آنے والی رپورٹس پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے چیف ٹریف پولیس آفیسر کی تعریف بھی کی عدالت نے دوران سماعت قراردیا کہ ون وے کی خلاف ورزی کے حوالے سے 2000 روپے چالان کیا جائے جوڈیشل واٹر اینڈ انوائرمنٹ کمیشن نے سموگ کے خاتمہ کیلئے نئی سفارشات سے متعلق رپورٹ بھی عدالت میں داخل کروادی گئی دوران سماعت عدالتی حکم پرچیف ٹریفک پولیس آفیسر (سی ٹی ای او)منتظر مہدی نے عدالت میں پیش ہوکرکہا کہ 54 پوائنٹس کے باعث ٹریفک کے مسائل پیدا ہوتے ہیں جیل روڈ کا کچھ کرنا ہو گا سنگل فری ہونے سے خرابی ہوئی،سنگل فری ہونے سے لوگ سڑکیں کراس نہیں کر سکتے درخواست گزار کے وکیل ابو ذر سلمان خان نیازی نے عدالت میں مؤقف اختیارکیا کہ چیف ٹریفک پولیس آفیسر بہتر کام کررہے ہیں،خدشہ ہے چیف ٹریفک پولیس آفیسر کو تبدیل کردیا جائے گا جس پر عدالت نے چیف ٹریفک پولیس آفیسر کا تبادلہ کرنے سے روکنے کاحکم دے دیا چیئرمین جوڈیشل واٹر اینڈ انوائرمنٹ کے کمیشن کے فوکل پرسن کمال حیدر ایڈووکیٹ نے لاہور شہر میں ٹریفک کی روانگی برقرار رکھنے سے متعلق سفارشات پیش کی گئیں جس میں سفارش کی گئی کہ شہر میں غیر ضروری اور عارضی پارکنگ کو فوری ختم کیا جائے،غیر قانونی پارکنگ والوں کے خلاف جرمانے کئے جائیں،شہر میں روزانہ کی بنیاد پر اینٹی انکروچمنٹ آپریشن کئے جائیں،فٹ پاتھوں پر رکاوٹ پیدا کرنے والوں کے خلاف کارروائیاں کی جائے،سڑک پیدل کراس کرنے والوں کو اوور ہیڈ برج استعمال کرنے کی آگاہی دے جائے،ٹریفک رولز کی خلاف وزری کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز کارروائیاں کی جائے،ٹریفک قوانین کی خلاف وزری کرنے والوں کے خلاف جرمانوں کو بڑھایا جائے،ڈرائیونگ لائسنس لازمی قرار دیا جائے،کم عمری میں ڈرائیونگ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

سموگ کیس

مزید :

صفحہ آخر -