میلسی‘کرمداد قریشی‘ رحیم یار خان میں خاتون سمیت تین قتل 

میلسی‘کرمداد قریشی‘ رحیم یار خان میں خاتون سمیت تین قتل 

  

میلسی،کرمداد قریشی، رحیم یار خان (نامہ نگار، بیورو رپورٹ)  تھانہ گجرات کے علاقہ موضع ڈبی شاہ کے رہائشی دو بھائیوں  کے درمیان 6/7 سال سے  زمین کا تنازعہ چل(بقیہ نمبر28صفحہ نمبر6)

 رہا تھا، گزشتہ روز محمد سراج آپنے بیٹے اسد رضا اور اپنے بھتیجے محمد شہزاد کے ساتھ اپنی ملکیتی اراضی پر موجود تھا، کہ ملزمان محمد یاسر نواز   کلاشنکوف، محمد شعیب  سٹل اور فیض اللہ، محمد الیاس پسران منظور  ڈنڈے لیکر  آگئے،  محمد یاسر نواز پتافی نے اسد رضا کے منہ پر فائر کرکے زخمی کردیا، محمد شعیب نے محمد شہزاد کو ٹانگ پر فائر کرکے زخمی کردیا، اسد رضا نشتر ہسپتال ملتان جان کی بازی ہار گیا، مضروب محمد شہزاد کو ڈسٹرکٹ ہسپتال مظفرگڑھ منتقل کر دیا گیا، پولیس نے مقتول اسد رضا کے والد محمد سراج کی مدعیت میں چاروں ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کردیا، ایس ایچ او تھانہ گجرات رائے مرید حسین نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان کی گرفتاری کیلئے چھاپے جاری ہیں، آشنا کے ہمراہ بھاگنے کا شبہ دو بچوں کی ماں کو حقیقی بھائیوں نے شوہر کی ملی بھگت سے گلے میں رسی کا پھندہ ڈال کر موت کے گھاٹ اتار دیا   تھانہ سٹی سی ڈویژن کی حدود عبداللہ ٹان اسلامیہ کالونی میں پیش آیا دو کمسن بچوں کاشف علی اور فاطمہ بی بی کی ماں کی گلا گھونٹ کر جان لی گئی۔ مقتولہ کا مرگی کا مریض بھائی محمد ابراہیم اقبال جرم کر کے ملزمان کو بچانے کی کوشش کرتا رہا جبکہ دوسرا بھائی نصیر احمد اور شوہر محمد رزاق پوسٹ مارٹم رکوانے کیلئے بھاگ دوڑ کرتے رہے۔ موقع پر موجود تھانہ سٹی سی ڈویژن کے کانسٹیبل توقیر احمد نے میڈیا کو بتایا بڑے بھائی نے خود پولیس سے رابطہ کرکے بتایا کہ ان کی ہمشیرہ کو چھوٹے بھائی نے قتل کر دیا ہے۔ فیملی کا موقف تھا یہ واقعہ حادثاتی طور پر پیش آیا اور وہ قانونی کارروائی نہیں کرنا چاہتے گرفتار ملزم محمد ابراہیم نے پولیس کو ابتدائی بیان میں کہا ہے کہ مقتولہ اپنے آشنا اختر  کے ساتھ بھاگ کر کراچی جانا چاہتی تھی اس نے گلے میں رسی ڈال کر صرف اسے چارپائی سے باندھا تھا۔ عشرت بی بی کے زور لگانے پر رسی ٹائٹ ہونے سے اس کا سانس بند ہو گیا ملزمان میں سے کوئی بھی میڈیا سے بات کرنے پر تیار نہیں تھا۔ رشتے دار مقتولہ کے کمسن بیٹے کاشف علی کو بھی میڈیا سے بات کے دوران اٹھا کر لے گئے۔ کاشف علی نے معصومانہ انداز میں سرائیکی میں کہا کہ ماموں نے میری ماں مارا ہے  ایس ایچ او تھانہ سٹی سی ڈویژن محمد وقاص بھنڈر کا کہنا ہے کہ ڈی پی او اختر فاروق کے حکم پر اس کیس کی میرٹ پر تفتیش کی جا رہی ہے اور پولیس خود مدعی بنے گی اور پوسٹ مارٹم بھی ضرور کروایا جائے گا۔ سینچاں والا کے مقام پر نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے وارث علی نامی مقامی شہری کو  شدید زخمی کیا جو  مہلک زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں جاں بحق ہو گیا  ڈی پی او محمد ظفر بزدار کی ہدایات کی روشنی میں ایکٹنگ ایس پی  ا نوسٹی گیشن روبینہ عباس، ایس ڈی پی او سرکل صدر ناصر علی اور ایس ایچ او موقع  پر پہنچ گئیب۔۔ فرانزک ٹیمیں موقع سے شواہد اکٹھے کر رہی ہیں۔۔ ڈی پی او محمد ظفر بزدار نے ایس ایچ او متعلقہ کو ملزمان کو 48 گھنٹے کے اندر ٹریس کرنے کے احکامات جاری کر دئیے۔۔ ڈی پی او محمد ظفر بزدار نے وقوعہ کا فوری طور پر مقدمہ درج کرنے کے احکامات بھی جاری کر دیئے۔۔ تمام ملزمان کا سراغ لگانیاور  فوری گرفتاری کیلئے سی آئی اے اور آئی ٹی سمیت سپیشل ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -