میو ہسپتال کا شعبہ امراض قلب دوبارہ فعال، 80ملین کی مشینری نصب، ایک ہفتہ میں 8کامیاب بائی پاس آپریشن

میو ہسپتال کا شعبہ امراض قلب دوبارہ فعال، 80ملین کی مشینری نصب، ایک ہفتہ میں ...

لاہور(جنرل رپورٹر)سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن پنجاب نجم احمدشاہ کی خصوصی دلچسپی اور ذاتی کوششوں سے میو ہسپتال کا شعبہ امراض قلب دوبارہ فعال ہو گیا ہے اور گزشتہ ایک ہفتہ کے دوران کارڈیک سرجن ڈاکٹر راجہ پرویز اختر نے دل کے کامیاب آٹھ بائی پاس آپریشن سرانجام دئیے ہیں۔یہ بات میڈیکل سپرنٹنڈنٹ میو ہسپتال ڈاکٹر امجد شہزاد نے بتائی۔انہوں نے بتایا کہ حکومت کی کوشش ہے کہ مریضوں کو بہتر سے بہتر طبی سہولیات فراہم کی جائیں اورٹیچنگ ہسپتالوں میں موجود امراض قلب کے علاج کی سہولیات کا یکساں استعمال یقینی بنایا جائے۔اس مقصد کے پیش نظر سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن نجم احمد شاہ نے میو ہسپتال کے کارڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ کو اپ گریڈ کرنے اور یہاں کارڈیک سرجن تعینات کرنے کے لئے خصوصی دلچسپی لیتے ہوئے اقدمات کئے۔ ڈاکٹر امجد شہزاد کا کہنا تھا کہ محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر نے معروف کارڈیک سرجن ڈاکٹر راجہ پرویز اختر کو میو ہسپتال میں تعینات کر دیا ہے جنہوں نے ایک ہفتہ کے دوران دل کے 8 بائی پاس آپریش کئے ہیں۔ڈاکٹر امجد شہزاد کا کہنا تھا کہ محکمہ صحت کی جانب سے فراہم کردہ 80 ملین روپے کی ہارٹ لنگ کی نئی مشین بھی نصب کر دی گئی ہے ۔مزید براں گزشتہ تین ماہ کے عرصہ میں 100 غریب مریضوں کی انجیو پلاسٹی بالکل مفت کی گئی ہے جن کے علاج پر ہسپتال نے 2 کروڑ روپے خرچ کئے ۔انہوں نے مزید کہا کہ ہیلتھ کیئر ڈلیوری کی تاریخ میں پہلی مرتبہ بہرے پن کے علاج کے لئے تین کوکلیئر پلانٹ مریضوں کو بالکل مفت لگائے گئے جن کی مالیت مارکیٹ میں 6 ملین روپے بنتی ہے۔ڈاکٹر امجد شہزاد نے بتایا کہ الائیڈ ہیلتھ پروفیشنلز کے کورسز میں بھی اضافہ کیا جارہا ہے اور نئے اقدامات اور سہولیات کے نتیجے میں ہسپتال کے آؤٹ ڈور اور ان ڈور مریضوں کی تعداد میں مزید اضافہ ہو گیا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1