پنجاب میں شیڈو کابینہ بنانے کی حمایت اوروفاق میں مخالفت

پنجاب میں شیڈو کابینہ بنانے کی حمایت اوروفاق میں مخالفت

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ میں زیر سماعت کیس کی سماعت کے دوران تحریک انصاف نے پنجاب میں شیڈو کابینہ بنانے کی حمایت جبکہ پیپلز پارٹی نے وفاق میں شیڈو کابینہ کے قیام کی مخالفت کر دی، دونوں جماعتوں کی طرف سے جواب عدالت میں پیش کردیئے گئے ہیں جنہیں مسٹرجسٹس شاہد کریم نے عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنانے کی منظوری دے دی ہے ،لائرز فاؤنڈیشن فار جسٹس نے درخواست دائر کررکھی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 91کے تحت یہ لازم ہے کہ وفاق اور صوبے میں اپوزیشن لیڈروں کی سربراہی میں شیڈوکابینہ تشکیل دی جائے لیکن تین برس گزرنے کے باوجود شیڈو کابینہ تشکیل نہیں دی جا رہی ہیں، شیڈو کابینہ حکومت کی کارکردگی پر نظر رکھنے کیلئے قائم کی جاتی ہے، پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے جواب داخل کراتے ہوئے کہا کہ اگر عدالت پنجاب میں شیڈو کابینہ قائم کرنے کا حکم دے تو تحریک انصاف کو کوئی اعتراض نہیں ہوگا، قومی اسمبلی میں پیپلز پارٹی کی طرف سے اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کی طرف سے جواب داخل کراتے ہوئے کہا گیا کہ آئین میں شیڈو کابینہ قائم کرنے کی کوئی گنجائش نہیں ہے، اپوزیشن پہلے ہی حکومت کی کارکردگی پر نظر رکھے ہوئے اور حکومت کی کرپشن اور بے ضابطگیوں کی وقتاً فوقتاً نشاندہی بھی کرتی رہتی ہے، عدالت نے تمام جوابات کو ریکارڈ کا حصہ بناتے ہوئے مزید دلائل کے لئے سماعت 3ہفتوں تک ملتوی کر دی۔

مزید : صفحہ آخر