تھائی لینڈ حکومت نے ساحلی سیاحتی مقامات پرسگریٹ نوشی پر پابندی عائد کردی

تھائی لینڈ حکومت نے ساحلی سیاحتی مقامات پرسگریٹ نوشی پر پابندی عائد کردی
تھائی لینڈ حکومت نے ساحلی سیاحتی مقامات پرسگریٹ نوشی پر پابندی عائد کردی

  

بنکاک (یوا ین پی)تھائی لینڈ کی حکومت نے ملک کے 20 اہم ساحلی سیاحتی مقامات پرسگریٹ نوشی پر پابندی عائد کردی ہے۔

بھارت،دیوالی پر فیکٹری میں دھماکہ،8 افراد ہلاک 20 زخمی ، عمارت منہدم

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق تھائی حکام کی طرف سے ایک نیا قانون منظور کیا گیا ہے جس کا اطلاق آئندہ ماہ نومبرسے ہوگا۔ اس قانون کے تحت ساحلی سیاحتی مقامات پر سگریٹ نوشی کرنے والے افراد کو قید اور جرمانہ کی سزائیں دی جا سکیں گی۔قانون کی خلاف ورزی کی صورت میں3 ہزار امریکی ڈالر کے مساوی یا پاکستانی 3لاکھ روپے سے زائدرقم جرمانہ اور ایک سال قید کی سزا دی جائے گی۔یہ پابندی ایک ایسے وقت میں لگائی گئی ہے جب ساحلی علاقوں میں صفائی کی حالیہ مہم کے دوران سیگریٹ کے 1 لاکھ 40 ہزار باقیات جمع کی گئی تھیں۔ سیگریٹ کے یہ ٹکڑے 2.5 کلو میٹر کے علاقے سے مشہور جزیرہ بوکیٹ کے علاقے پاٹونگ سے جمع کیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ تھائی لینڈ کے جزیروں کرابی، کوہ، ساموی، باتایا، بوکیٹ اور فانگ نگا میں بڑی تعداد میں لوگ سیاحت کے لیے آتے ہیں۔تھائی لینڈ کے محکمہ سیاحت کے سربراہ یوتھا ساک سوپارسورن کاکہنا ہے کہ تھائی لینڈ کے جزائر جنوب مشرقی ایشیا کے سب سے خوبصورت علاقے ہیں۔ ان کے قدرتی حسن کو قائم رکھنا ہمارا ہدف ہے۔سیگریٹ نوشی کے لیے ساحلی علاقوں میں جگہیں مختص کی گئی ہیں۔ تاہم ان جگہوں کے سوا پبلک مقامات پر سیگریٹ نوشی پر قید اور جرمانہ کی سزا دی جائیگی۔

مزید :

بین الاقوامی -