اشرافیہ نے قوم کی جیبیں خالی کر دیں، نیب کرپٹ ترین ادارہ بن چکا : شہباز شریف

اشرافیہ نے قوم کی جیبیں خالی کر دیں، نیب کرپٹ ترین ادارہ بن چکا : شہباز شریف

  

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ بلوچستان، خیبرپختونخوا، سندھ، پنجاب، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان مل کر پاکستان بنتا ہے اور ہم سب نے مل کر ہی پاکستان کو ایک عظیم ملک بنانا ہے۔ چاروں صوبوں میں عوام کو علاج معالجے، تعلیم اور دیگر بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے چیلنجز پر قابو پانا ہے اور اس کیلئے وسائل کی پہلے کوئی کمی تھی اور نہ اب ہے۔ اگر کمی ہے تو صرف نیت کی، کام کرنے کی اور جذبے کی۔ پاکستان ہے تو ہم سب ہیں، پاکستان نہیں تو ہماری کوئی شناخت نہیں۔ پاکستان کی وحدت اور یگانگت مضبوط ہوگی تو ہم سب مضبوط ہوں گے۔ تعلیم، علاج معالجے اور امن و امان کی صورتحال میں بہتری لانے تک قوم ترقی کرسکتی ہے نہ توانا ہوسکتی ہے۔ 70 برس کے دوران من حیث القوم اہداف حاصل کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ وزیراعلیٰ محمدشہبازشریف نے ان خیالات کا اظہار بلوچستان ریذیڈنشل کالج خضدار کے طلباء سے گفتگو کرتے ہوئے کیا،جنہوں نے ماڈل ٹاؤن میں وزیراعلیٰ سے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ نے بلوچستان کے طلباء کو لیپ ٹاپ دیئے اور کالج کیلئے نئی بس دینے اور کالج میں رہائشگاہیں بنانے کا اعلان کیا۔ وزیراعلیٰ نے کالج کے لئے جدید سائنس لیب بھی بنانے کا اعلان کیا۔ وزیراعلیٰ نے طلباء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وفاق سے صوبوں کو وسائل کی تقسیم این ایف سی ایوارڈ کے ذریعے ہوتی ہے۔ 2010 ء میں سیاسی قوتوں نے مشاورت کیساتھ این ایف سی ایوارڈ پر اتفاق رائے کیا۔ وہ کام جو مشرف ڈنڈے کے زور پر نہ کرا سکا سیاسی قوتوں نے پیار، محبت اور باہمی مشاورت سے کر لیا۔ پنجاب حکومت نے اس وقت اپنے حصے کے 11 ارب روپے این ایف سی ایوارڈ کیلئے دیئے اور گزشتہ 7 برس کے دوران پنجاب اپنے حصے کے77 ارب روپے اس ضمن میں دے چکا ہے۔ غریب آدمی کو انصاف نہیں ملتا اور غریب آدمی قبر میں چلا جاتا ہے جبکہ امیر آدمی انصاف خرید لیتا ہے۔ نوجوان یہ پوچھنے میں حق بجانب ہیں کہ شہبازشریف، عمران خان، آصف زرداری، یوسف رضا گیلانی اور دیگر حکمرانوں نے اس ملک کا کیا کیا ہے؟ ہم نے اسے کہاں سے کہاں پہنچا دیا ہے؟ 70 برس کے دوران ہم سب نے مل کر اپنی کرتوتوں کی وجہ سے پاکستان کے درخشاں مستقبل کو گہنا دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج ہم ایک دوسرے کو نوچ رہے ہیں۔ بے بنیاد الزامات لگا کر قوم کو گمراہ کر رہے ہیں۔ 70 برس کے دوران جنہوں نے قوم کو بے دردی سے لوٹا ہے ان کا احتساب نہیں کیا گیا۔ احتساب کرنا نیب کا کام ہے لیکن نیب ایک کرپٹ ترین ادارہ بن چکا ہے۔ مشرف دور اور اس کے بعدکے ادوارمیں نیب کو سیاسی طور پر استعمال کیا گیا، یہی وجہ ہے کہ نیب کرپشن ختم کرنے کی بجائے کرپشن کا گڑھ بن چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی اشرافیہ کو اپنی سوچ بدلنے کی ضرورت ہے لیکن بدقسمتی سے اشرافیہ نے اپنی جیبیں بھریں، اپنی حالت بدلی اور قوم کی جیبیں خالی کردیں اور آج اشرافیہ امیر اور عوام غریب ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب حکومت کوئٹہ میں دل کے امراض کا جدید ہسپتال بنا رہی ہے اور اس مقصد کیلئے فنڈز مختص کر دیئے گئے ہیں۔ ریذیڈنشل کالج خضدار کے پروفیسر مطیع الرحمن نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں یہاں آ کر محسوس ہو رہا ہے کہ ہم اندھیرے سے نکل کر روشنی میں آ گئے ہیں۔ لاہور اور پنجاب کی ترقی دیکھ کر دل خوش ہو گیا ہے۔ اگر قیادت مخلص اور محب وطن ہو تو پورے ماحول پر اس کا اثر پڑتا ہے۔ پنجاب حکومت نے جس طرح ہماری مہمان نوازی کی ہے، یہ ہمارے لئے کسی اعزاز سے کم نہیں ہے۔ صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن علی رضا گیلانی، مشیر ڈاکٹر عمر سیف، وائس چیئرمین پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ ڈاکٹر امجد ثاقب، سیکرٹری ہائر ایجوکیشن اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

شہباز شریف

مزید :

صفحہ اول -