افغانستان ، طالبان کا فوجی کیمپ پر حملہ ، 43اہلکار ہلاک ، 10حملہ آور بھی مارے گئے

افغانستان ، طالبان کا فوجی کیمپ پر حملہ ، 43اہلکار ہلاک ، 10حملہ آور بھی مارے ...

کابل (این این آئی)افغانستان کے صوبہ قندھار میں فوج کے اڈے پر طالبان کے حملے میں 43 افغان فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ،زخمیوں میں بعض کی حالت نازک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ کا خدشہ ہے۔وزارتِ دفاع کے ترجمان دولت وزیری کے مطابق دو خودکش حملہ آو فوجی اڈے میں گھس گئے اور اندھادھند فائرنگ کی۔افغان سکیورٹی فورسز کے مطابق دہشت گردوں نے پہلے بارود سے بھری گاڑی کو دھماکے سے اڑایا جس کے بعد انہوں نے ملٹری بیس پر فائرنگ شروع کردی ۔ایک افغان سکیورٹی اہلکار نے غیر ملکی میڈیا کو اپنا نام نہ بتانے کی شرط پر بتایا کہ دو مبینہ خودکش بمباروں نے رات کے وقت قندھار کے ضلع مائے وند میں آرمی کے بیس کیمپ پر حملہ کیا۔انہوں نے کہا کہ ایک حملہ آور نے خود کو گاڑی سمیت اڑا لیا جبکہ دوسرے حملہ آور نے دھماکے کے بعد جائے وقوع پر موجود سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں پر فائرنگ شروع کردی جو کئی گھنٹوں تک جاری رہی۔افغان میڈیا کے مطابق قندھار میں موجود افغان نیشنل آرمی کے اس بیس کیمپ میں 60 سے زائد اہلکار تعینات تھے۔ادھر طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرلی۔دوسری جانب ملٹری بیس پر خود کش حملے اور فائرنگ کے دوران غیر ملکی افواج فضائی کی کارروائی میں دہشت گردوں کو نشانا بنایا جس کے نتیجے میں 10 طالبان مارے گئے۔دوسری جانب افغانستان میں ایک اور امریکی ڈرون حملہ کیا گیا جس میں 4 افراد ہلاک ہو گئے۔ ذرائع کے مطابق افغان سرحدی علاقے جاوارے سر میں امریکی ڈرون حملہ کیا گیا ہے جس میں شدت پسندوں کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق امریکی ڈرون طیاروں نے جاوارے سر کے علاقے میں ایک مقام پر دو میزائل فائر کیے جس سے 4 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

افغانستان/فوجی کیمپ/حملہ

نیویارک/اسلام آباد (این این آئی،صباح نیوز)اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے افغانستان میں ہونے والے بزدلانہ دہشت گرد حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ ہر قسم کی دہشت گردی بین الاقوامی امن اور سلامتی کیلئے انتہائی سنگین خطرات کا باعث ہے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق گزشتہ روز جاری ہونے والے ایک بیان میں سلامتی کونسل نے ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ اور حکومتِ افغانستان سے تعزیت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی خواہش کا اظہار کیا ۔دوسری جانب وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے قندھار میں افغان سکیورٹی اہلکاروں پر ہونے والے دہشت گردوں کے حملہ کی سخت مذمت کی ہے۔ایوان وزیراعظم سے جاری تعزیتی بیان میں وزیراعظم محمد شاہد خاقان عباسی نے دہشت گردی کے اس واقعہ میں انسانی جانوں کے ضیاع پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان خود دہشت گردی کا شکار ہے، ہم دہشت گردی کی کسی بھی قسم کی مذمت کرتے ہیں۔ دریں اثنائترجمان دفتر خارجہ نے قندھار میں آرمی بیس پر دہشتگرد حملے کی مذمت اور بزدلانہ دہشتگرد حملے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کیا ہے ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا نے جاری بیان میں کہاکہ پاکستان دہشتگردی کی ہر قسم اور شکل کی مذمت کرتا ہے اور دہشتگردی کے خاتمے کے لیے تعاون کی کوششیں جاری رکھنے کے عزم کا دوبارہ اعادہ کرتا ہے۔

مذمت

مزید : صفحہ اول