’’پنجاب کی ترقی دیکھ کر یوں لگا ہم اندھیروں سے نکل کر روشنی میں آگئے ہیں‘‘

’’پنجاب کی ترقی دیکھ کر یوں لگا ہم اندھیروں سے نکل کر روشنی میں آگئے ہیں‘‘

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کی قیادت میں پنجاب حکومت نے لاہور اورصوبے کی ترقی کیلئے بے مثال اقدامات کیے ہیں۔ہمارے کالج کے طلباء اورہم نے پنجاب کی ترقی کا عملی مشاہدہ کیا ہے ۔بلوچستان سے پنجاب آکر ہمیں یوں لگا کہ جیسے ہم اندھیروں سے نکل کرروشنی میں آگئے ہیں۔ہماری آنکھیں خیرہ اوردل حیران ہیں۔ان خیالات کا اظہار بلوچستان ریذیڈنشل کالج خضدار کے پروفیسر مطیع الرحمان نے وزیراعلیٰ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ لا ہور کی ترقی اورتعلیمی میدان میں پنجاب حکومت کے شاندار اقدامات دیکھ کر بہت خوشی ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پنجاب کی حکومت نے ہماری بڑی مہمان نوازی کی ہے جس پر ہم بے حد ممنون ہیں۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے طلباء سے کھل کرہر موضوع پر گفتگو کی اوران کے سوالات کے جوابات دےئے۔وزیراعلیٰ نے ملک کی ترقی وخوشحالی کی راہ میں حائل رکاوٹوں کی وجوہات کا مدلل انداز میں ذکر کیا اورپاکستان کی ترقی کے لئے محنت ،دیانت اورامانت کے اصولوں کو اپنانے پر زوردیا۔ان کا کہنا تھا کہ امید کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑنا چاہیے۔ہم وطن عزیز کو عظیم ملک بنانے کے لئے پر امید ہیں۔وزیراعلیٰ نے اس موقع پر علامہ اقبال ؒ کے ’’جواب شکوہ ‘‘کا یہ شعر پڑھا۔

کس قدر تم پر گراں صبح کی بیداری ہے

ہم سے کب پیار ہے! ہاں نیند تمہیں پیاری ہے

وزیراعلیٰ نے اپنی گفتگو میں علامہ اقبالؒ کے یہ اشعار بھی پڑھے۔

تمنا آبرو کی ہے اگر گلزار ہستی میں

تو کانٹوں میں الجھ کر زندگی کرنے کی خو کر لے

نہیں یہ شان خود داری چمن سے توڑ کر تجھ کو

کوئی دستار میں رکھ لے کوئی زیب گلو کر لے

وزیراعلیٰ نے خضدار کالج کے پروفیسر شہزادہ سلیم کی جانب سے پنجاب حکومت کے بلوچستان کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کو ویب سائٹ پر جاری کرنے کے مطالبے پر کہا کہ یہ آپ کی اچھی تجویز ہے اوراس پر عمل ہوگا۔وزیراعلیٰ نے ہلکے پھلکے انداز میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آپ مغلیہ دور کے نہیں بلکہ دورحاضر کے شہزادہ سلیم ہیں۔جس پر تمام شرکاء مسکرادےئے۔

گفتگو

مزید : صفحہ آخر