بس کنڈیکٹرکا دوران سفر سپیشل بچوں پر تشدد، ہیڈ ماسٹر اور ہیڈ مسٹریس معطل

بس کنڈیکٹرکا دوران سفر سپیشل بچوں پر تشدد، ہیڈ ماسٹر اور ہیڈ مسٹریس معطل

لاہور( ایجو کیشن رپورٹر)سپیشل بچوں کی بسوں میں غیر تربیت یافتہ عملہ تعینات کرنے پر سیکرٹری سپیشل ایجوکیشن پنجاب نے دو ہیڈماسٹرز کو معطل کردیا۔ تفصیلات کے مطابق دو روزقبل سوشل میڈیا پر بس کنڈیکٹر کی طرف سے سپیشل بچوں پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب کی طرف سے نوٹس لیا گیا تھا جس کے بعد محکمہ سپیشل ایجوکیشن پنجاب نے فوری کارروائی کرتے ہوئے متعلقہ سکول سربراہان اور بس عملہ کے خلاف انکوائری کا آغاز کیا۔سیکرٹری سپیشل ایجوکیشن پنجاب خالد محمود نے روزنامہ پاستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپیشل بچوں کو زدوکوب کرنے کے واقعہ کی فوری چھان بین کروائی گئی اور ابتدائی طورپر انکوائری کمیٹی کی رپورٹ میں گلبرگ کے دوسکولوں کے سربراہان کو سپیشل بچوں کیلئے بسوں میں غیر تربیت یافتہ عملہ تعینات کرنے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا۔انہوں نے بتایاکہ گورنمنٹ ہائی سکول فار ہیئرنگ بوائز گلبرگ کے ہیڈ ماسٹر مشتاق احمد اور گورنمنٹ سنٹرل سکول فار ہیرنگ چلڈرن کی ہیڈمسٹریس ساجدہ یعقوب کوٹرانسپورٹ اور عملے کی موثر مانیٹرنگ نہ کرنے پرمعطل کیا گیاہے اور انکے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کارروائی بھی شروع کردی گئی ہے۔قبل ازیں سپیشل بچوں پر تشددکرنیوالے دو بس کنڈیکٹر محمد اکرم اور عثمان احمد سمیت مالی شوکت علی کوبھی معطل کردیا گیا ہے اور انکے خلاف ایف آئی آر بھی درج کروا دی گئی ہے۔

سپیشل بچے،تشدد

مزید : صفحہ آخر