27لاکھ افغانوں کو شہریت دینے کا فیصلہ موخر

27لاکھ افغانوں کو شہریت دینے کا فیصلہ موخر

  

پشاور (آن لائن) افغان مہاجرین کو شہریت دینے کے دو صوبائی حکومتوں نے مخالفت کر دی ہے جس پر 27لاکھ سے زائد افغان مہاجرین کو پاکستانی شہریت دینے کا فیصلہ موخر کیا جا رہا ہے وفاقی حکومت نے افغان مہاجرین اور بنگالیوں کو پاکستانی شہریت دینے کا اعلان کیا تھا تاہم اس اعلان پر بعض حکومتی اداروں نے بھی تحفظات ظاہر کئے بلوچستان کے قوم پرست پارٹی نے بھی اس کی مخالفت کی تھی ۔ صوبائی کابینہ میں بھی یہ فیصلہ زیر غور آیا تھا 27لاکھ سے زائد افغان مہاجرین کی وطن واپسی کی ڈیڈ لائن بھی ختم ہونے کے بعد اس میں توسیع کی گئی ہے تاہم اب ان کے ممکنہ طور پر وطن واپسی اور ان کی آخر ی بار توسیع اوران کے لئے جامع پالیسی مرتب کر رہی ہے تاکہ مستقل بنیادوں پر ان کا فیصلہ ہو سکے ذرائع نے بتایا ہے کہ 27لاکھ سے زائد افغان مہاجرین کو شہریت دینے کے فیصلے کے صوبے کے بعض اراکین اسمبلی نے بھی مخالفت کی تھی اور موقف اختیار کیا تھا کہ اس سے مسائل پیدا ہو نگے ۔ خیبر پختونخوامیں افغان مہاجرین کے شک پر ڈیڑھ لاکھ سے زائد شہریوں جبکہ فاٹا کے ساتوں اضلاع میں ایک لاکھ سے زائد شہریوں کے شناختی کارڈ تاحال بلاک ہیں ۔

شہریت موخر

مزید :

علاقائی -