نیب کا کرپشن میں ملوث 3سابق وزرائے اعظم سمیت نامور سیاستدانوں کی گرفتاری کا فیصلہ

نیب کا کرپشن میں ملوث 3سابق وزرائے اعظم سمیت نامور سیاستدانوں کی گرفتاری کا ...

  

اسلام آباد (آن لائن) نیب نے کرپشن میں ملوث نامور سیاستدانوں کی گرفتاری بارے بڑا آپریشن شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا،نیب نے انتہائی اہم ثبوت حاصل ہونے کے بعد اگلے چند دنوں میں ان تیس قومی سیاستدانوں کی گرفتاری کا فیصلہ کیا ہے متوقع طور پر گرفتار کئے جانے والوں میں تین سابق وزرائے اعظم شامل ہیں جن میں دو کا تعلق پیپلزپارٹی سے بتایا جارہا ہے۔ مصدقہ ذرائع کے مطابق نیب آئندہ ہونے والی بورڈ میٹنگ میں ان گرفتاریوں کے حوالے سے منظوری لینے کا ارادہ رکھتا ہے۔ نیب کے کرپشن کے خلاف اس بڑے آپریشن کی حتمی تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں اور اس بلا امتیاز آپریشن کے دوران سندھ ٗ پنجاب ٗکے پی کے ور بلوچستان کے کئی بڑے سیاستدان زد میں آجائیں گے۔ نیب کی تحقیقات کے مطابق ان 30 سیاستدانوں کے خلاف پانچ کھرب روپے سے زائد کی کرپشن کے مختلف کیسوں کی تفتیش کی گئی۔ جس کے دوران نیب کے تفتیشی افسران نے ناقابل تردید شواہد حاصل کے ہیں۔ باوثوق ذرائع کے مطابق تحقیقات کی روشنی میں بلوچستان کے سابق وزیراعلیٰ اسلم رئیسانی کی گرفتاری کا بھی امکان ہے۔ جبکہ مسلم لیگی رہنماء امیر مقام کے خلاف ناجائز اثاثے بنانے کا مقدمہ بھی حتمی شکل اختیار کر چکا ہے۔ جبکہ سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف کے خلاف منی لانڈرنگ کے اہم شواہد نیب نے حاصل کرلئے ہیں اور اسی طرح سابق وزیر خزانہ شوکت ترین کے خلاف آئی پی پیز سکینڈل کی تمام دستاویزات نیب نے حاصل کرلی ہیں اور سابق وزیراعظم شوکت عزیز ناجائز اثاثہ جات کے کیس میں تحقیقات مکمل کی گئی ہیں جبکہ پیپلزپارٹی کے دو سابق وزرائے اعظم بھی اس آپریشن کی لپیٹ میں آرہے ہیں جبکہ سابق وزیر تعلیم پنجاب رانا مشہود کے خلاف پنجاب سپورٹس بورڈ میں بھاری کرپشن کے ثبوت نیب نے حاصل کرلئے ہیں۔ مزید برآں نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف بھی تحقیقات مکمل ہوچکی ہیں۔ بلوچستان کے سابق وزیر خزانہ خالد لانگو ، سابق سیکرٹری مشتاق رئیسانی کے خلاف بھی نیب نے تمام ثبوت اکٹھے کرلئے ہیں اور ان کی دوبارہ گرفتاری کا امکان ہے۔ سابق وزیر پیٹرولیم انور سیف اللہ کے خلاف بھی ناجائز اثاثوں سے متعلق نیب نے تحقیقات مکمل کرلی ہیں۔ سابق صوبائی وزیر بلوچستان اسفند یار کاکڑ کے بارے میں بھی نیب نے کرپشن کے تمام شواہد اکٹھے کرلئے ہیں ۔ سندھ اسمبلی کے سابق سپیکر آغا سراج درانی بھی نیب کے اس آپریشن کی زد میں آنے والے ہیں اور ان پر بھی ناجائز اثاثے بنانے کا الزام ہے۔ ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم کے رہنماء بابر غوری ،سندھ کے سابق و زیر قانون ضیاء لنجار ٗ سابق وزیر مواصلات ارباب عالمگیر خان اور ان کی اہلیہ عاصمہ ارباب عالمگیر کے خلاف بھی نیب نے اہم شواہد اکٹھے کرلئے ہیں۔ میئر کراچی وسیم اختر کے خلاف بھی نیب نے تحقیقات مکمل کرلی ہیں۔باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ نیب کی اس کارروائی کی زد میں حکومتی صفوں میں موجود کچھ اہم شخصیات کی گرفتاری کا بھی قوی امکان ہے۔

نیب/گرفتاریاں

مزید :

صفحہ اول -