نشتر یونیورسٹی سے ڈاکٹروں کے تبادلے،پی ایم اے کی کال پر ملتان میں آج احتجاجی مظاہرہ

نشتر یونیورسٹی سے ڈاکٹروں کے تبادلے،پی ایم اے کی کال پر ملتان میں آج احتجاجی ...

  

ملتان (وقائع نگار)پی ایم اے ملتان کی کال پر ڈاکٹروں کے تبادلوں کے خلاف احتجاج جاری ہے ۔ جبکہ آج (ہفتہ) نشتر ہسپتال(بقیہ نمبر49صفحہ12پر )

میی احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا۔پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے مطابق پنجاب حکومت ٹس سے مس نہ ھوئی۔ نشتر میڈیکل یونیورسٹی وہسپتال کے اہم شعبہ جات کے پروفیسرز کے تبادلوں کی وجہ سے غریب مریض کنسلٹنٹ رائے سے محروم ہوگئے ہیں۔ سول سوسائٹی نے ڈاکٹروں کے احتجاجی مظاہرے میں ساتھ دینے کا اعلان کردیا۔ نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے جن پروفیسرز کی ہفتہ وار تین یوم ڈی جی خان میں غازی میڈیکل کالج میں ڈیوٹی اور ایک پروفیسر کی ٹرانسفر پر پی ایم اے ملتان کی کا ل پرنشتر ھسپتال میں ڈاکٹروں کی جانب سے کالی پٹیاں باندھ احتجاجی تحریک شروع ھوئی تھی اسے آٹھ دن گذر گئے لیکن پنجاب حکومت کی جانب سے کسی قسم کا مثبت جواب نہ آیا، اور اس عمل کے نتیجے میں ایمرجنسی وارڈ ، ان ڈور و او پی ڈی میں آنے والے مریض کنسلٹنٹ رائے سے محروم ھونے لگے ہیں۔ سول سوسائٹی کے نمائندوں نے پنجاب حکومت کے اس بے حس رویے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ھے اور آج( ہفتہ) نشتر ہسپتال کے مین گیٹ پر پی ایم اے ملتان کے احتجاجی مظاہرے میں ساتھ دینے کا اعلان کردیا ہے۔ دوسری جانب پی ایم اے ملتان کا ہنگامی اجلاس ڈاکٹر مسعود ہراج کی زیر صدارت طلب کیا گیا جس میں حکومت پنجاب سے مطالبہ کیا گیا کہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے جن پروفیسرز کی ہفتہ وار تین یوم ڈی جی خان غازی میڈیکل کالج میں ڈیوٹی اور ایک پروفیسر کی ٹرانسفر کی گئی ھے اور کارڈیالوجی ہسپتال کے ڈاکٹرز کا ٹرانسفر کیا گیا ہے ان حکم ناموں کو فوری طور پر واپس لیا جائے بصورت دیگر ہفتہ کے روز سے شروع ھونے والا احتجاج کا دائرہ ضلع ملتان کے تمام ہسپتالوں میں پھیلا دیا جائے گا اور اس کی ذمہ داری متعلقہ حکام پر عائد ہوگی۔

ڈاکٹر/احتجاجی مظاہرہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -