شانگلہ کے علاقے چکیسر میں ضلعی انتظامیہ کی کھلی کچہری

شانگلہ کے علاقے چکیسر میں ضلعی انتظامیہ کی کھلی کچہری

  

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر)شا نگلہ چکیسر میں ضلعی انتظامیہ کی کھلی کچہری ۔علاقہ مکینوں نے مسائل کا انبار لگا دئے، تحصیل چکیسر میں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے ، سڑک کھنڈرات کا منظر پیش کر رہا ہے ، پورے علاقے میں پینے کے صاف پانی نہ ہونے کے برابر ہے،ہسپتال میں ڈاکٹرز اور مشینری ناپید ہیں، علاقے میں صفائی سھترائی کی کمی۔ ضلعی انتظامیہ ہر سال یہاں لوگوں کو اکٹھا کرکے کھلی کچہری میں عوام سے رائے اور مسائل پر گفت و شنید کرتی ہیں مگر کسی قسم کا کوئی شنوائی نہیں ہوتا ،گزشتہ کئی سالوں سے یہاں پرسڑک کا برا حال ہے تو تعلیمی مد میں ضلعی حکومت بھاری کرپشن کرکے ان پر سڑک بناتی ہے مگر محکمہ تعلیم ان سے خبر تک نہیں ہوتی ،سڑک کی تعمیر میں بڑے پیمانے پر کرپشن ہوا ہے ،نوے لاکھ روپے سڑک کیلئے مختص ہیں مگر سڑک پر غیر معیاری کام ہوا ۔چکیسر چار حجروں پر مشتمل ہیں مگر محکمہ پبلک ہیلتھ کی عدم توجہ کی وجہ سے یہاں پر صاف پانی نہ ہونے کے برابر ہیں ،لوگ بوند بوند کو ترس گئے ، کسی کی ذاتی اثر رسوخ ہو تو وہ چشموں سے پانی کے پائپ لگا تے ہیں مگر غریب عوام شدید مشکلات کا شکار ہیں ، دیگر محکموں پر بھی عوام نے شدید اعتراضات کئے جس میں محکمہ سی اینڈ ڈبلیو ، پبلک ہیلتھ ، تعلیم ، صحت ،لیبرز،جنگلات و دیگر پر کئے گئے ۔علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ محکمہ جنگلات میں سوختہ لکڑی پر بھی پابندی لگا کررکھی ہے اور شانگلہ می سردیوں کا موسم شروع ہے ، لہٰذا دادرسی کی جائے۔محکموں پر کئے گئے اعتراضات میں ان محکموں کے ضلعی سربراہان نے فرداً فرداً جوابات دئے اور محکمہ کی کارکردگی کو بہتر بنانے کیلئے اقدامات شروع کرنے کا بھی وعدہ کیا ۔کھلی کچہری میں ڈپٹی کمشنر شانگلہ کے علاوہ اسسٹنٹ کمشنر الپوری طارق محمود،اے سی بشام واجد علی ، ڈی ایف او محمد امجد ، ڈی او زراعت عذیر خان ، ڈی ای او تعلیم محمد امین ، اے ڈی ای او محمد اقبال ،اے ڈی ای او فیمیل بخت روان ، انجینئر سی اینڈ ڈبلیوہارون کے علاوہ دیگر محکموں کے ضلعی سربراہان نے کھلی کچہری میں شرکت کی ۔ علاقہ مکینوں کاکہنا تھا کہ انھوں نے گزشتہ کھلی کچہری میں مسائل پیش کئے تھے تاہم ایک سال گزرنے کے باوجود اس میں سے کسی ایک کا بھی حل تلاش نہیں کیا گیا ۔۔

Back to Conversion Tool

مزید :

پشاورصفحہ آخر -