بچوں کیخلاف جرائم کا ارتکاب کرنے والوں سے کھلی جنگ ہے :آئی جی سندھ

بچوں کیخلاف جرائم کا ارتکاب کرنے والوں سے کھلی جنگ ہے :آئی جی سندھ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سینٹرل پولیس آفس کراچی میں امریکن حکومت کے تحت بچوں کے اغواء اور فارنزک انٹرویونگ کلاس پر مشتمل 5روزہ سیشن کا انعقاد کیا گیا،جس میں سندھ پولیس کے اے ایس آئی سے لیکر انسپکٹر رینک کے 24افسران نے حصہ لیا اور مذکورہ عنوان پر تجربہ کار اورماہر انسٹرکٹر کی جانب سے دیئے گئے لیکچرز سے استفادہ کیا۔کلاس کے اختتامی سیشن میں قونصل جنرل امریکہ جوآنے ویگنرنے بطور مہمان خصوصی شرکت کی جبکہ انکے ہمراہ امریکن ایمبیسی کے دیگر نمائندگان بھی تھے ۔آئی جی سندھ ڈاکٹر سیدکلیم امام نے اس موقع پر اپنے خطاب میں قونصلیٹ جنرل امریکہ کی آمد پر انکا ودیگر مہمانان گرامی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ بلاشبہ پاکستان کے دیگر صوبوں اور باالخصوص صوبہ سندھ کی پولیس کے ساتھ امریکہ اور آئی این ایل کا مختلف شعبہ جات کی بہتری اور ترقی کیلئے ہرممکن تعاون ایک سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ بچوں کے اغواء اور بداخلاقی کے حوالے سے زینب کیس ہر ایسے مجرم کیلئے باعث عبرت ہے جو کبھی کسی بھی طرح ایسے گھناؤنے واقعات میں ملوث رہا ہو یا ارادہ رکھتا ہو۔انہوں نے کہا کہ بچوں کیخلاف گھناؤنے جرائم کا ارتکاب کرنے یا ارادہ رکھنے والوں کے ساتھ سندھ پولیس کی کھلی جنگ ہے اور اس جنگ میں شامل سندھ پولیس کا ہرافسر اور جوان اسے ایک جہاد سمجھ کر انتہائی پرعزم اور باحوصلہ ہے ۔آئی جی سندھ نے کہا کہ بچوں کیخلاف گھناؤنے جرائم کے مرتکبین کسی بھی طور انسان کہلانے کے لائق نہیں ہیں۔ایسے جرائم کے انسداد اور بیخ کنی کیلئے پولیس کے ساتھ ساتھ والدین،اساتذہ کرام، معاشرے میں آباد مختلف کمیونٹیز،معززین علاقہ معروف سیاسی وسماجی شخصیات اور مذہبی قائدین کا انفرادی اور اجتماعی کردار بھی کلیدی حیثیت رکھتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جرم چاہے کیسی ہی حالت یا نوعیت کا کیوں نہ ہو جرم ہی کہلائے گا۔تاہم اسکے انسداد کیلئے پولیس اور قانون نافذ کرنیوالے اداروں کے ساتھ ہر سطح پر تعاون اور بروقت اطلاع انتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔مجرم چاہے کتنا ہی شاطر یا چالاک ہو قانون کی گرفت سے اسکا بچنا یا ایک خاص عرصہ تک چھپا رہنا مشکل ہی نہیں بلکہ ناممکن بھی ہے ۔قونصل جنرل امریکہ نے اپنے خطاب میں اس اہم اور خاص عنوان پر مشتمل کلاس میں شرکت کو اپنے لئے باعث افتخار قرار دیتے ہوئے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ بچوں کیخلاف ہونیوالے جرائم اور ان کے مؤثر انسداد جیسے اقدامات میں سندھ پولیس انتہائی سنجیدہ اور پرعزم ہے ۔انہوں نے آئی جی سندھ کی جانب سے صوبے میں قیام امن اور ایسے واقعات سمیت دیگر جرائم کے انسداد سے متعلق جملہ کاوشوں کو لائق تحسین اور ستائش قرار دیا اور باالخصوص بچوں کے تحفظ جیسے اقدامات اُٹھانے پر سندھ پولیس اور قانون نافذ کرنیوالے دیگر اداروں کا بھی شکریہ ادا کیا اور فرض کی راہ میں اپنی قیمتی جانوں کا نذرانہ دینے والے افسران وجونوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔اس موقع پر انہوں نے زینب زیادتی وقتل کیس کا بھی خصوصی طور پر زکر کیا اور ملوث مجرم کو باعث عبرت بنانے میں تفتیش کے جملہ امور اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کے کردار کو معاشرے کیلئے ایک مثال قرار دیا اور بتایا کہ کس طرح متحد ہوکر جرائم کیخلاف جنگ جیتی جاسکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ امریکن حکومت کا سندھ پولیس کے ساتھ تعاون ایک مثال بن چکا ہے جسکا تسلسل جاری رہیگا اور جو کسی بھی طور تعطل کی زد میں نہیں آئیگا۔اس موقع پر کلاس میں حصہ لینے والے شعبہ تفتیش اور پراسیکیوشن سندھ پولیس میں اسناد تقسیم کی گئیں جبکہ آئی جی سندھ نے پولیس کیجانب سے قونصل جنرل امریکہ کو یادگاری شیلڈ بھی پیش کی۔کلاس کے اختتامی سیشن میں ایڈیشنل آئی جی سندھ،ڈی آئی جی ہیڈکوارٹرزسندھ،ڈی آئی جی اسٹیبلشمنٹ سندھ، اے آئی جیز ایڈمن اور آپریشنز سندھ نے بھی شرکت کی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -