ایڈیشنل آئی جی کراچی کا مختلف تھانوں کا اچانک دورہ،ہیڈ محرر معطل

ایڈیشنل آئی جی کراچی کا مختلف تھانوں کا اچانک دورہ،ہیڈ محرر معطل

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)ایڈیشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر امیر شیخ نے شہر کے مختلف علاقوں اور تھانوں کے اچانک دوروں کا سلسلہ پھر شروع کر دیا ہے۔جمعہ کو اچانک کی گئی کارروائی کے دوران ایک ایس ایچ او سمیت 16 پولیس ملازمین کو نقد انعامات دیئے جبکہ بدانتظامی پر ٹریفک سیکشن افسر اور تھانے کے ہیڈ محرر کو معطل کردیا۔کراچی پولیس کے ترجمان عادل رشید کے مطابق ڈاکٹر امیر شیخ جمعہ کی صبح سویرے سہراب گوٹھ تھانے پہنچے، جہاں لاک اپ میں قید ملزمان کی شکایات سنیں اور اپنے خرچ پر تمام ملزمان کو ناشتہ کرایا۔ سی سی پی او نے باوردی درست اور چوکس ڈیوٹی کرنے پر سہراب گوٹھ تھانے کے سنتری اور منشی سمیت 4 اہلکاروں کو انعامات دیئے۔ تھانہ سہراب گوٹھ کی بالائی منزل پر بیرک کی صفائی نہ ہونے پر ہیڈ محرر تھانہ سہراب گوٹھ کو معطل کرنے کا حکم دیا۔سپر ہائی وے پرون وے کی خلاف ورزی روکنے کیلئے ٹریفک پولیس موجود نہ تھی، اس کے قریب ہی دوسرے مقام پر5ٹریفک اہلکار ایک ساتھ چوکس موجود تھے، جس پر ایڈیشنل آئی جی برہم ہوئے ۔بدانتظامی اورون وے کی خلاف ورزی روکنے میں ناکامی پر ٹریفک پولیس کے سیکشن افسر گلزار ہجری کو معطل کردیا۔ایڈیشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر امیر شیخ نے شاہراہ پاکستان پر یوسف پلازہ تھانے کی گشت پر موجود پولیس موبائل کے باوردی درست اہلکاروں کو نقد انعامات دیئے۔ کراچی پولیس چیف ڈاکٹر امیر شیخ جمشید کوارٹر تھانے پہنچے، رپورٹنگ روم کی لائٹس بند ہونے پر برہمی کااظہارکیا جبکہ لاک اپ میں موجود ملزم سے پوچھ گچھ بھی کی۔اچھی کارکردگی اور باوردی درست ہونے پر پولیس ملازمان، ایس ایچ او جمشید کوارٹر رضوان پٹیل اور مددگار 15 کے اہلکاروں کو نقد انعامات دیئے۔ایڈیشنل آئی جی کراچی نے کراچی پولیس کا نظام اور پولیس کے رویوں کو تبدیل کرنے کے لئے لائحہ عمل کے تحت اپنے عہدے کا چارج لینے کے بعد سے تھانوں کے اچانک دوروں کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -