لندن کی فلاحی تنظیم مسلم روز کے تعاون سے چلنے والا سکول تھر کے بچوں کو تعلیم کے زیور سے آشنا کرنے لگا

لندن کی فلاحی تنظیم مسلم روز کے تعاون سے چلنے والا سکول تھر کے بچوں کو تعلیم ...
لندن کی فلاحی تنظیم مسلم روز کے تعاون سے چلنے والا سکول تھر کے بچوں کو تعلیم کے زیور سے آشنا کرنے لگا

  

عمرکوٹ (سید ریحان شبیر ) تھرپارکر ضلع کے پسماندہ گاؤں جھمراڑی میں لندن کی فلاحی تنظیم  مسلم روز کے تعاون سے چلنے والا سکول تھر کے بچوں کو تعلیم کے زیور سے آشنا کرنے لگا تین سال قبل شروع ہونےوالے  سکول سے سینکڑوں بچے علم کی روشنی سے منور ہورہے ہیں تھر کےپسماندہ گاؤں جھمراڑی کا پرائمری سکول جو کبھی ویران اور  مقامی وڈیروں کا ڈیرہ تھا اب وہاں معیاری تعلیم دی جارہی ہے لندن میں بیٹھ کر دیکھا کہ یہاں کے بچے سکول سے دور مال  مویشی چارنے مٹی میں کھیلنے  مصروف ہیں تب سے انکو بدلنے کی دل میں  ٹھان لی اور اس میں میری اللہ نے مدد کی چیرپرسن  مسلم روز ویلفیئر سارہ قیوم کی میڈیا سے بات چیت تفصیلات کے مطابق  لندن میں مقیم پاکستانیوں کی فلاحی تنظیم مسلم روز ویلفئر کی جانب سے تین سال قبل اس سکول مذکورہ  فلاحی تنظیم نے اپنی نگرانی میں لیکر گاؤں کے     بچوں کو تعیلم دینے کا سلسلہ شروع کیا گیا  ۔

اس وقت ایک سو سے زائد بچے اس سکول میں  زیر تعلیم ہیں جنہیں معیاری تعلیم کےساتھ ہرممکن سہولیات دی جاری ہےلندن میں مقیم سارہ قیوم چیف ایگزیکٹیو ڈاریکٹر مسلم روز ویلفئیر نے بتایا کہ میرا تعلق کراچی سے ہے اور اس وقت میں لندن میں مقیم ہوں مسلم روز ویلفئیر یوکے بیس چئیرٹیبل این جی او ہے انہوں نے مزید کہا کہ میں نے چار سال  قبل تھر آئی تھی ان دنوں میں تھر کے حالات دیکھ بہت تکلیف ہوئی خاص کرکے تھر کے مصوم بچوں کو مٹی میں کھیلتے دیکھا تھر میں ناخواندگی دیکھی تو دل میں اسی وقت تہہ کرلیا کہ میں تھر کے جہالت کےخاتمے اور علم کے روشن چراغ جلانے  کی پوری کوشش کروں گی لندن جاکر اس پر کام شروع کیا اور اس میں اللہ تعالیٰ نے میری مدد کی عمرکوٹ سے پچاس کلومیٹر دور گاوں جھمراڑی پر ہم نے کام شروع کیا ۔

یہاں پر سکول کو فعال کیا جو کہ وڈیروں کا ڈیرہ بناہوا تھا  یہاں کے بچوں کو اچھی و معیاری تعلیم  بہتر ماحول کے ساتھ ساتھ صحت کی سہولیات دینے کی شروعات کی  مسلسل چار سال سے چلبے والے سکول میں بچوں کو مفت تعلیم دی جاتی ہے بچوں کو ڈریسز کتابیں کاپیاں پینسلز تک میں لندن سے بھیجتی ہوں ان شاگروں کو ایک وقت کا کھانا بھی مسلم روز ویلفئیر کی جانب سے کھلایا جاتاہے ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ بچوں اور گاوں والوں کےعلاج کیلئے ڈسپینسری بھی قائم کررکھی ہے جہاں پر مفت میں علاج کیا جاتاہے انہوں نے کہا کہ بچوں اور بچیوں کو تعلیم سے آراستہ کرنے والے  اساتذہ کو تنخواہ مسلم روز ویلفئیر کی جانب سے دی جاتی ہے اور سکول میں سولر لائٹ کا بھی اہتمام کیا گیا ہے تاکہ بچوں کو شدید گرمی سے محفوظ رکھاجاسکے اسکول میں مختلف گاوں کے بچے بھی زیر تعلیم ہیں جو روزانہ 20کلومیٹر کا فاصلہ تہہ کرکے آتے جاتے ہیں  ۔

سارا قیوم نے مزید کہا کہ ہماری کوشش ہے صحرائی علاقوں کے پسماندہ اور بنیادی مسائل حل کرکے انکو بھی جینے کا حق دیا جائے انہوں نے کہا کہ گاوں جھمراڑی اور دیگر علاقوں میں بھی پانی کی سہولیات مہیاکر رکھیں ہیں  مسلم روز ویلفئیر کے تحت تھرپارکر،کشمیر اور راولپنڈی میں پروجیکٹ چل رہے ہیں جہاں پر عام لوگوں کے بنیادی حقوق پر ہم کام کررہے ہیں ایک سوال کے جواب میں نے کہا کہ ہمارے ادارے کو وفاقی یا صوبائی سطح پر کوئی امداد نہیں کی جارہی بلکہ یہ سب کچھ ہم مخیرحضرات کے تعاون سے اور اپنے بل بوتے  پر کر رہے ہیں اگر سرکار ہمارا  ساتھ دیں  تو مزید بہتر کام کرسکتے ہیں۔

دوسری جانب میڈیا  کی جانب سے گاوں جھمراڑی کا دورا کرنے پر علاقہ مکینوں اور شاگردوں نے بتایا کہ ہمارے گاوں میں میڈیکل پینے کے پانی اور تعلیم کی بہتر سہولیات مسلم روز ویلفئیر ٹرسٹ کی جانب سے جاری ہیں  علاقہ مکین دین محمد سمیجو اور دیگر گاؤں  والوں نے  میڈیا کو بتایا کہ مسلم روز ویلفئیر نے جب سے ہمارے گاوں میں کام شروع کیا ہے ہمارے بچے جو مویشی چارنے میں مشغول تھے وہ چار سالوں سے مسلم روز سکول میں زیر تعلیم ہے جس سے ہمارہ مستقبل بھی روشن ہونے کی امیدیں ہیں انہوں نے مزیدکہاکہ ہم دعاگوں ہیں مسلم روز ویلفئیر اور میڈیم سارا قیوم یوں ہی تھری باشندوں کی خدمت کا سلسلہ جاری رکھیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -