’اگر آپ کا ہر وقت میٹھا کھانے کو دل کرتا ہے تو اس کی وجہ یہ ہے کہ۔۔۔‘ ماہرین نے وہ بات بتادی جو آپ کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

’اگر آپ کا ہر وقت میٹھا کھانے کو دل کرتا ہے تو اس کی وجہ یہ ہے کہ۔۔۔‘ ماہرین ...
’اگر آپ کا ہر وقت میٹھا کھانے کو دل کرتا ہے تو اس کی وجہ یہ ہے کہ۔۔۔‘ ماہرین نے وہ بات بتادی جو آپ کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)پروٹین صحت کے لیے انتہائی مفید غذائی جزو ہے جو روزمرہ خوراک کا لازمی حصہ ہونا چاہیے تاہم کسی کو کیسے پتا چلے گا کہ اس کی خوراک میں پروٹین کی کمی ہے یا نہیں؟ برطانوی ماہر غذائیات مے سمپکین نے کچھ ایسی علامات بتا دی ہیں جن کے ذریعے باآسانی اس سوال کا جواب معلوم کیا جا سکتا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق ان میں پہلی علامت یہ ہے کہ جس شخص کی خوراک میں پروٹین کی کمی ہو اس کاہر وقت میٹھا کھانے کو دل کرتا رہتا ہے۔ مے سمپکین کا کہنا ہے کہ ”کاربوہائیڈریٹس کی حامل خوراک جسم میں فوری طور پر شوگر پیدا کرتی ہے، چنانچہ انسانی جسم انسولین خارج کرکے خون سے اس شوگر کو ختم کردیتا ہے، اس کے نتیجے میں انسان کو مزید میٹھا کھانے کی طلب ہونے لگتی ہے۔ اگر خوراک میں پروٹین شامل ہو تو یہ جسم میں شوگر بننے کا عمل سست کر دیتا ہے، جس سے نہ انسولین جسم سے شوگر ختم کرتی ہے اور نہ آدمی کو میٹھے کی طلب ہوتی ہے۔

مے سمپکین کا کہنا تھا کہ ”خوراک میں پروٹین کی کمی کی مزید وجوہات میں بالوں کا پتلا ہونا، پٹھوں کا کمزور اور ڈھیلا ہو جانا، مدافعتی نظام کی خرابی، خراب نیند، ذہنی تناﺅ، ناخنوں کا کمزور اور خستہ ہو جانا، جلد کا خشک اور مردہ ہوجانا، سوچ کا دھندلا جانا اور کسی بات پر توجہ مرکوز نہ کر پانا شامل ہیں۔ جس کسی میں یہ علامات موجود ہوں اسے چاہیے کہ وہ اپنی خوراک میں بیف، مچھلی ، پولٹری، انڈوں اور ڈیری مصنوعات کا استعمال زیادہ کردے۔ یہ تمام چیزیں فرسٹ کلاس پروٹین کے حصول کا بہترین ذریعہ ہیں۔“

مزید :

تعلیم و صحت -