”پولن الرجی کی شدت سے 10منٹ میں موت واقع ہو سکتی ہے“

  ”پولن الرجی کی شدت سے 10منٹ میں موت واقع ہو سکتی ہے“

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(جنرل رپورٹر)پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن، پاکستان کے شمال مشرقی علاقوں کے لوگوں کی صحت پر تشویش کا اظہار کرتی ہے اور خاص طور پر وفاقی دارالحکومت اور اسکے گرد نواح کے رہائشی افراد جو موسم کی تبدیلی کے ساتھ فضا ء میں بڑھتی ہوئی پولن کی وجہ سے صحت کے مسائل کا شکار ہو تے ہیں۔پولن الرجی ایک خطرناک مسئلہ ہے جس سے لوگ ہیفیور (Hay Fever) میں مبتلا ہوتے ہیں اور سانس کی بیماریوں میں مبتلا افراد زیادہ مشکلات کا شکار ہوتے ہیں۔ہیفیور پولن سے الرجی کا رد عمل ہوتا ہے خاص طور پر جب پولن کے ذرات آپ کے منہ، ناک، آنکھوں اور گلے تک پہنچ جاتے ہیں، اس کی علامات میں ناک کا بہنا، ناک کا بند ہونا، کھانسی، آنکھوں میں خارش، گلے کی خراش، سردرد، چھینک اور سانس لینے میں دشواری شامل ہیں۔متوازن غذا ء کا استعمال کریں، زیادہ پانی پییں اور 6سے 8گھنٹے کی نیند ضرور لیں۔علامات کی صورت میں فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ پولن الرجی کو ہلکا مت لیں کیونکہ ان علامات میں شدت کی صورت میں 10منٹ کے اندر موت واقع ہو سکتی ہے۔