دیمک کے حملہ سے بچاؤ کے اقدامات کئے جائیں،زرعی ماہرین

دیمک کے حملہ سے بچاؤ کے اقدامات کئے جائیں،زرعی ماہرین

  



لاہور(لیڈی رپورٹر) زرعی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ دیمک کے حملہ سے بچاؤ کے اقدامات نہ ہونے کی صورت میں بھاری نقصان ہو سکتا ہے اس لیے کاشتکار زرعی فصلات، پھلدار درختوں، جنگلات اور گھریلو باغیچوں کو دیمک کے حملہ سے بچاؤ کے لئے بروقت حفاظتی تدابیر اختیار کریں۔ماہرین نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے بتایاکہ دیمک کے حملہ سے پودے اور درخت مکمل طور پر سوکھ جاتے ہیں جس کی بدولت ہر سال لاکھوں روپے خرچ کرنا پڑتے ہیں جو کہ ملکی معیشت کا بڑا نقصان ہے۔ دیمک کے خاندان میں ملکہ، بادشاہ، سپاہی اور کارکن ہوتے ہیں، خوراک حاصل کرنے کیلئے یہ اگتے ہوئے پودوں سے لے کر جوان پودوں مثلاً گندم، کپاس، مکئی، گنا، دالیں اور پھلدار پودوں وغیرہ پر حملہ کرتا ہے۔ دیمک کے حملہ سے متاثرہ پودوں کو اوپر سے کھینچا جائے تو یہ آسانی سے جڑ کے ساتھ ہی اوپر آ جاتا ہے۔ پودوں کی جڑوں پر چھوٹے چھوٹے سوراخ موجود ہوتے ہیں جن میں عام طور پر سفید رنگ کے چھوٹے چھوٹے کیڑے چلتے پھرتے نظر آتے ہیں۔ فصلات پر دیمک کے حملہ کو روکنے کے لئے گوڈی کریں یا بار ہیرو چلائیں۔ گوبر کی کچی کھاد کبھی استعمال نہ کریں اور جہاں دیمک کی آبادی زیادہ ہو وہاں انہیں تلاش کر کے ان کے گھروں کو زمین سے نکال کر تباہ کردیں۔ آبپاش علاقوں میں راؤنی کرتے وقت یا آبپاشی کے دوران اور بارانی علاقوں میں فصل بونے سے پہلے زمین کی تیاری کے وقت یا حملہ ہونے کی صورت میں جب بارش کا امکان ہو تو محکمہ زراعت (توسیع و پیسٹ وارننگ) کے مقامی فیلڈ عملہ کے مشورہ سے زہروں کا استعمال کریں۔

مزید : کامرس /رائے /اداریہ