مسائل حل کرنے کیلئے سرکاری ادارے ملکر منصوبہ بندی کریں، جسٹس قاسم خان

  مسائل حل کرنے کیلئے سرکاری ادارے ملکر منصوبہ بندی کریں، جسٹس قاسم خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
 ملتان ( خبر نگار خصوصی) جسٹس محمد قاسم خان نے کہا ہے کہ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے جیسے ہی انہیں اوتھ کمشنر کمیٹی کا چیئرمین بنایا تو انہوں نے خواتین کو 25 فیصد کوٹہ دیا۔ بار عہدیداران نے مسائل بتائے تو انتظامیہ کو لاہور بلوا لیا ڈپٹی کمشنر ملتان مسائل کے حل کے لئے سنجیدہ نظر آئے، چیف جسٹس کی اجازت سے مسائل کے حل کے لئے کمیٹی بنائی، کوئی رکاوٹ نظر آئے تو جسٹس محمد امیر بھٹی ہمیشہ مشکلات حل کرتے نظر آئے، ڈپٹی کمشنر عامر خٹک نے کچھ مسائل فوری حل کرنے کی یقین دھانی کرائی ہے وہ(بقیہ نمبر30صفحہ12پر )


 وکلاءکے نمائندہ ہیں، جدید تحقیق کے مطابق ماحول انسانی ذہن پر اثر انداز ہوتا ہے۔خوشگوار ماحول سے آنے پر مسائل جلد حل ہوتے ہیں ہائیکورٹ کے قریب ہائی وے کے دفتر کو حاصل کرنے کے معاملات جلد حل ہونگے اگر ایس پی چوک سے طارق روڈ تک ٹریفک بلاک ہوجائے تو انتظامیہ کی نا اہلی ہے۔ان خیالات کا اظہار جسٹس محمد قاسم خان نے ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیاان کا مزید کہنا تھا کہ کچہری توسیع کے حوالے سے بار عہدیداران کوشش کر رہے ہیں سٹی کمپلیکس کی توسیع کے لیے سمری میں لکھ کر بھیج دیا ہے سب ادارے مل کر مسائل کا حل نکالتے ہیںکسی ادارے کی پراپرٹی دوسرے کو دیتے وقت اناءکا مسئلہ نا بنائیں اگر جگہ کم ہے تو مل کر گزارہ کرنا چاہیے ہمیں دو سو کنال نہیں بلکہ تھوڑی سی جگہ چاہیے تاکہ مل کر رہ سکیں جج کی آواز کا اثر اس وقت ہوتا ہے جب بار ساتھ کھڑی ہو نوجوان وکلاءجوڈیشری میں آنے کے لئے تیاری کریںپریکٹیکل فیلڈ میں محدود تیاری ہوتی ہے ججز کے پیپرز کے لیے نوجوان وکلاءخود کو تیار کریںقبل ازیں جسٹس سردار محمد سرفراز ڈوگر نے کہا کہ وکلاء عدالتوں میں پڑھ کر آئیں، عدالتوں میں پیش ہوتے وقت کتابیں ساتھ اٹھا کر آئیں، میں نے کبھی سیاست کا حصہ نہیں رہامیں کسی بھی تقریب سے پہلی مرتبہ خطاب کر رہا ہوںجسٹس سید محمد شہباز علی رضوی نے کہا ہے کہ صدر ہائیکورٹ بار کے عہدے پر فائز ہونے کی یادیں آج بھی تازہ ہیں۔ ملتان کے نواحی علاقے ڈسٹرکٹ لیہ میں سے تعلق رکھتا ہوں میری خواہش تھی ملتان ڈسٹرکٹ بار کی ممبر شپ لوں جب سے جج منتخب ہوا جسٹس محمد قاسم خان کو ملتان بار کی بہتری کے لئے جستجو کرتے دیکھا ہے، بینچ اور بار کے ساتھ ہی جوڈیشل سسٹم چل سکتا ہے جسٹس محمد امیر بھٹی نے کہا ہے کہ عدالت عالیہ کے احکامات پر انتظامیہ کو عملدرآمد کرنا چاہیے گورئمنٹ کا فرض بنتا ہے کورٹس کے احاطے میں تمام سہولیات فراہم کریں کورٹس کے احاطے میں پانی کی فراہمی یقینی ہونی چاہیئے کسی ادارے کی پراپرٹی خالی پڑی ہو تو گورئمنٹ کا کام ہے دوسرے ادارے کی ضرورت پوری کرے ہم وکلاءکے مشکور ہیں جنہوں نے یہ محفل سجائی۔ تقریب میں جسٹس محمد قاسم خان ، جسٹس امیر بھٹی ، جسٹس سید شہباز علی رضوی، جسٹس سرفراز ڈوگر، سیشن جج سہیل اکرام ، ڈپٹی کمشنر عامر خٹک اور سی پی او ملتان زبیر دریشک کو اعزاز شیلڈز پیش کی گئیں۔پنڈال میں خواتین کی کثیر تعداد موجود رہی، خواتین اور نوجوان وکلاءنے ججز صاحبان کے ساتھ تصاویر بھی بنوائیں۔ ملتان ( خبر نگار خصوصی) لاہورہائی کورٹ ملتان بنچ کے سیئنر جج مسٹر جسٹس محمدقاسم خان نے ہائی کورٹ بار کی طرف سے ججز کے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں وکلاءکے مطالبہ پر ضلع کچہری اور ہائی کورٹ کے ایریا میں ترقیاتی کام کرنے میں ذاتی دلچسپی لینے پر ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی کوششوں کو سراہا اور ان کی تعریف کی۔ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر کا تعلق اس علاقے سے نہیں ہے لیکن ان کی دلچسپی سے لگتا ہے وہ اس خطے کے لوگوں کےخلوص اور دوستی سے بہت متاثر ہیں۔مسٹر جسٹس نے گزشتہ روز ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کی طرف ججز کے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں ایک بار پھر ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کا ذکر کیا اور کہا کہ ڈسٹرکٹ اور ہائی کورٹ بار میں ترقیاتی منصوبوں پر لگ بھگ چار کروڑروپے خرچ کئے جارہے ہیں۔مسٹر جسٹس نے کہا کہ اگر انتظامیہ خلوص نیت کے ساتھ اپنی ذمہ داریاں نبھائے تو ایک آئڈیل معاشرہ تشکیل پا سکتا ہے۔ گزشتہ روز ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کی طرف سے ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کو اعزازی شیلڈ بھی دی گئی۔ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن ملتان کے زیر اہتمام ملتان سے تعلق رکھنے والے ہائیکورٹ کے ججز صاحبان کے اعزاز میں تقریب کا انعقاد کیا گیا، سیشن کورٹ آمد پر جسٹس صاحبان کو گارڈ آف آنر پیش کیا گیا اس موقع پر ڈسٹرکٹ جوڈیشری کے فاضل ججز نے جسٹس صاحبان کو پھولوں کے گلدستے پیش کئے، سیشن کورٹ کے احاطہ میں جسٹس صاحبان نے پودے لگائے اور ڈسٹرکٹ جوڈیشری سے ملاقات کی، جس کے بعد ڈسٹرکٹ بار وکلاء تقریب میں آمد پر پولیس کے چاق و چوبند دستے نے سلامی پیش کی اس موقع پر خواتین وکلاءنے جسٹس صاحبان کا استقبال کرتے ہوئے پھولوں کی پتیاں بھی نچھاور کیں، فاضل جسٹس صاحبان میں سئنیر جج جسٹس محمد قاسم خان، جسٹس محمد امیر بھٹی، جسٹس سید شہباز علی رضوی اور جسٹس سردار محمد سرفراز ڈوگر شامل تھے۔ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن ملتان کے زیر اہتمام ججز کے اعزاز میں تقریب کے مو قع پر چوک کچہری سے پارکنگ ہٹا لی گئی اور سیکورٹی فورسز کی بھاری نفری کچہری کے اطراف میں تعینات کی گئی اس مو قع پر کچہری کے داخلی دروازے عام عوام کے لیے بند تھے ، دروازوں کے بند ہونے کے باعث سائلین پر یشان ہوگئے اور مقدمات کی پیروی کو آئے سائلین کے لیے صرف اینٹی کرپشن عدالت والا دروازا کھولا گیا، دروازے بند ہونے کے باعث پولیس اور شہریوں میں تکرار جاری رہی، پارکنگ خالی رہنے کی وجہ سے ملتان کے باسی ٹریفک جام سے بچ گئے۔ ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن ملتان میں ججز کے اعزاز میں منعقد کردہ تقریب کے باعث وکلاءکی مقدمات کی پیروی کے لیے عدالتوں میں پیش نہیں ہوئے اور جزوی طور پر ہڑتال کی گئی۔ اس ضمن میں گزشتہ روز ڈسٹرکٹ بار میں منعقدہ تقریب کی وجہ سے ججز اور وکلاءنے تقریب میں شرکت کرنا تھی جس کی وجہ سے کئی مقدمات کی سماعت ملتوی ہوئی اور مقدمات کی پیروی کو آئے سائلین کو پر یشا نی کا سا منا کر نا پڑا ۔
قاسم خان