اوکاڑہ میں بچوں کو الٹا لٹکا کر تشدد کیے جانے کا ڈراپ سین ، دراصل بچوں کے والدین کہاں ہیں اور اس شخص کیساتھ ان کا کیا تعلق ہے؟ اندرونی کہانی سامنے آگئی

اوکاڑہ میں بچوں کو الٹا لٹکا کر تشدد کیے جانے کا ڈراپ سین ، دراصل بچوں کے ...
اوکاڑہ میں بچوں کو الٹا لٹکا کر تشدد کیے جانے کا ڈراپ سین ، دراصل بچوں کے والدین کہاں ہیں اور اس شخص کیساتھ ان کا کیا تعلق ہے؟ اندرونی کہانی سامنے آگئی

  

اوکاڑہ (ویب ڈیسک) سوشل میڈیا پر بچوں کو لٹکاکر تشدد کرنے کی ویڈیو وائرل ہونے کے معاملے کا ڈراپ سین ہوگیا، پولیس نے ملزم کو گرفتار کرلیا، وزیراعلیٰ کے حکم پر مقامی انتظامیہ نے بچوں سے ملاقات کی اور نئے کپڑے مہیا کرنے کے ساتھ ساتھ تعلیمی اخراجات اٹھانے کا اعلان کرتے ہوئے نقد مالی امداد بھی کی ۔ 

جیونیوز کے مطابق اوکاڑہ میں ایک شخص اپنے 3 بچوں کو ہمسائےکے گھر چھوڑ کرکسی کام سے چلاگیا،بچوں کے شور مچانے اور اپنے گھر والوں کے پاس جانے کی ضد پر ہمسائے نے انہیں کپڑے سے باندھ کر لٹکا دیا اور وحشیانہ تشدد کا نشانہ بناتا رہا۔اس واقعے کی ویڈیوسوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تو پولیس حرکت میں آئی اور ملزم کو حراست میں لے لیا۔یہ واقعہ اوکاڑہ کے گاؤں 49 فور ایل میں پیش آیا جہاں جہاں عباس نامی شخص اپنی فیملی کے ہمراہ کسی کام سے گیا اور اپنے 3 کم سن بچے ہمسائے یعقوب کے گھر چھوڑ گیا۔

بچوں نے شرارتیں کیں اور فیملی ممبرز کے پاس جانے کی ضد کی تو یعقوب اشتعال میں آگیا اور بچوں کو کپڑے سے باندھ کر اُلٹا لٹکانےکے بعد وحشیانہ تشدد کانشانہ بناتا رہا۔ملزم بچوں کی جوتے سے پٹائی کرتا رہا، بچے کانوں کو ہاتھ لگا کر معافیاں مانگتے رہے لیکن ملزم کو ترس نہ آیا۔گاؤں والوں نے بتایاکہ واقعہ 20 روز پرانا ہے اور ملزم بچوں کا چچا لگتا ہے۔دوسری جانب پولیس نے ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد ملزم کو حراست میں لے کر کارروائی شروع کر دی ہے جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے بھی واقعےکا نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او اوکاڑہ سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -اوکاڑہ -