داعش کا خواتین کے زیر جامہ کے ذریعے فوجیوں کو نشانہ بنانے کا منصوبہ

داعش کا خواتین کے زیر جامہ کے ذریعے فوجیوں کو نشانہ بنانے کا منصوبہ
داعش کا خواتین کے زیر جامہ کے ذریعے فوجیوں کو نشانہ بنانے کا منصوبہ

  



دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک)شام میں داعش کا خاتمہ ہونے کی خوشخبری دنیا کو سنائی جا رہی تھی لیکن اب خبر آئی ہے کہ داعش دوبارہ متحرک ہو رہی ہے اور اس بار اس نے اتحادی افواج پر ایسے طریقے سے خودکش حملے کرنے کی منصوبہ بندی کر رکھی ہے کہ سن کر امریکیوں کے ہوش اڑ گئے۔ دی مرر کے مطابق شام کے شہر عفرین سمیت کئی جگہوں سے خواتین کے ایسے زیر جامے ’بریزیئر‘ پکڑے گئے ہیں جن میں دھماکہ خیز مواد لگایا گیا تھا۔

سکیورٹی ماہرین کا کہنا ہے کہ داعش اب خواتین کو اتحادی افواج پر خود کش حملوں میں استعمال کرنے کی منصوبہ بندی رکھتی ہے اور اس نے بارودی مواد سے بھرے بریزیئر اس لیے بنائے ہیں تاکہ جامہ تلاشی کے باوجود بھی خودکش خواتین پکڑی نہ جائیں۔ اتحادی افواج کے ذرائع کا کہنا ہے کہ داعش پہلے خودکش جیکٹس استعمال کرتی تھی اب اس نے خودکش بریزیئر بنا ڈالے ہیں۔ اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ وہ لوگوں کو قتل کرنے کے لیے کس قدر بے چین ہے اور اس کے لیے کیا کچھ حربے آزما رہی ہے۔

مزید : بین الاقوامی