سابق آئی جی موٹر وے ذوالفقار احمد چیمہ کی نئی کتا ب Straight Talkکی تقریب رونمائی

سابق آئی جی موٹر وے ذوالفقار احمد چیمہ کی نئی کتا ب Straight Talkکی تقریب رونمائی
سابق آئی جی موٹر وے ذوالفقار احمد چیمہ کی نئی کتا ب Straight Talkکی تقریب رونمائی

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق آئی جی اور ممتاز دانشور ذوالفقار احمد چیمہ کی نئی کتا ب Straight Talkہر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کیلئے رہنمائی فراہم کرتی ہے، یہ کتاب سیاستدانوں، مختلف اداروں کے لیڈروں، وکلا، طلبا، اساتذہ، موجودہ اور مستقبل کے سول سرونٹس کیلئے ایک ریفرنس بک کی حیثیّت رکھتی ہے۔ اسمیں ہر ادارے کی اصلاح کیلئے ٹھوس اور قابلِ عمل تجاویز دی گئی ہیں۔ یہ ہر سول سرونٹ، ہر استاد اور ہر سیاستدان کے پاس ہونی چایئے۔ یہ با تیں مقررّین نے کتاب کی تقریبِ رونمائی سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔ تقریب کی صدارت سپریم کورٹ کے ریٹائیرڈ جج اور لاہور ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس اعجاز احمد چوہدری نے کی اور میزبانی شیریں اسد نے کی۔جسٹس اعجاز احمد چوہدری نے کہا کہ مصنّف ایک با کردار انسان ہیں۔ انہوں نے بڑے دو ٹوک انداز میں ملکی مسائل کا تجزیہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ انصاف کی عدم فراہمی میں عوام، پولیس اور عدلیہ سب ذمّے دار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے دو سالوں میں سپریم کورٹ کے بہت سے فیصلوں پر عوام کو تحفظات ہیں۔معروف قانون دان ایس ایم ظفر نے کہا کہ مصنّف کو اپنے بے داغ کردار کے باعث دیانت داری کی تلقین کرنے کا حق پہنچتا ہے کیونکہ اس نے خود بڑی اعلیٰ مثال قائم کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مصنف کے کئی آرٹیکل اتنے شاندار ہیں کہ وہ ہرپاکستانی کو پڑھنے چاہئے۔ ”all These colours are ours“ میں پاکستانی کلچر کی بڑی خوبصورتی سے عکاسی کی گئی ہے۔جسٹس (ر) ناصرہ جاوید اقبال نے کہا کہ مصنّف کا اپنی والدہ کی وفات پر لکھا گیا مضمون دل کو چھوتا ہے۔ اسکے علاوہ انہوں نے ہر اِیشو کو چھیڑا ہے اور اسکا قابلِ عمل حل دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذوالفقار چیمہ جیسے اعلیٰ کردار کے شخص کو ملک کے احتسابی نظام کا سربراہ ہونا چاہیے۔

سابق آئی جی سینیٹر رانا مقبول احمد نے کہا کہ کتاب کے مصنّف ذوالفقار چیمہ کی ذات قومی سرمائے کی حیثیت رکھتی ہے۔یہ کتاب نا صرف ہر شعبہ زندگی کے افراد کی راہنمائی کرتی ہے بلکہ اس نے ملک کے استحکام کے لئے ایک روڈ میپ دیا ہے۔ ہر شعبے کے لیڈروں کے لئے یہ ایک ریفرنس بک ہے۔ اس ملک کے تمام سول سرونٹس، اساتذہ، وکلا ، اور سیاستدانوں کو یہ ضرور پڑھنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ مصنف نے ہر ادارے کو ٹھیک کر کے دکھایا اور ہر جگہ لوگوں کو انصاف دیا اور امن بحال کیا۔ انہوں نے کہا کہ کتاب کی زبان میں روانی ہے اور اس سے ہر شعبہ زندگی کے لوگ بہت کچھ سیکھ سکتے ہیں۔ کتاب تعلیمی نصاب میں شامل کی جانی چاہیے۔سابق وفاقی سیکرٹری خواجہ شمائل احمد نے کہا کہ ذولفقار چیمہ نے نا مساعد حالات کے باوجود ہر جگہ قانون کی حکمرانی قائم کر کے دکھائی۔ یہ کتاب اس شخص کی ہے جس نے جو کہا اس پر عمل بھی کیا۔ وہ بلاشبہ تمام سول سرونٹس کے لئے رول ماڈل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ”Yes sir i will do it“اس قدر inspiring مضمون ہے کہ یہ پڑھنے والے کو مسحور کر دیتا ہے۔انہنوں نے کہا کہ مصنف نے درست لکھا ہے کہ پنجاب میں بد ترین سیاسی مداخلت نے گورننس کو تباہ کر دیا ہے۔سابق آئی جی پنجاب طارق سلیم ڈوگر نے کہا کہ مصنف نے پولیس افسر کی حیثیت سے ہر جگہ قانون کی حکمرانی قائم کی اور امن بحال کیا اور مکمل پیشہ وارانہ زندگی میں اعلیٰ کردار کا مظاہرہ کیا۔ موجودہ پولیس افسران کو چاہیے کہ وہ مصنف کی پیروی کریں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور