ہزارہ ڈویژن میں ذخیرہ اندوزوں کیخلاف کارروائی، 250گرفتار 

ہزارہ ڈویژن میں ذخیرہ اندوزوں کیخلاف کارروائی، 250گرفتار 

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)ہزارہ ڈویژن میں ضلعی سطح پر قائم کی گئی انتظامیہ کی خصوصی ٹیموں نے گذشتہ ہفتے مصنوعی مہنگائی اور ذخیرہ اندوزی کے خلاف جاری آپریشن میں ضروری اشیائے خوردونوش کی گراں فروشی اور ذخیرہ اندوزی پر 250افراد کو گرفتار کر لیا جبکہ ہزارہ کے تمام اضلاع میں تقریباً6300دکانوں، شاپنگ مالز، منڈیوں اور فلورملوں کی چیکنگ کرتے ہوئے قانون کی خلاف ورزی پر ان سے 28لاکھ روپے سے زائد جرمانہ وصول کیا گیا۔ یہ انکشاف کمشنر ہزارہ ڈویژن ریاض خان محسود کی زیر صدارت خوردنی اشیاء کی پرائس کنٹرول اور دستیابی کے حوالے سے منعقد کئے گئے اجلاس میں کیا گیا۔ اجلاس میں تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں، پرائس مجسٹریٹس، محکمہ خوراک و زراعت کے افسروں نے شرکت کی۔اجلاس میں ڈپٹی کمشنرو ں نے اپنے اپنے ضلع میں خوردنی اجناس کی دستیا بی اور ا ن کی تھو ک اور پر چو ن قیمتو ں کی صو رتحا ل پر بریفنگ دیتے ہو ئے بتا یا کہ  وزیر اعلی و چیف سیکر یٹری خیبر پختونخوا کے احکا ما ت کی روشنی میں کمشنر ہزارہ کی ہدا یا ت پر ضلعی سطح پر مقررہ کئے گئے مجسٹریٹ تما م فلور ملو ں کی با قا عدہ ما نیٹرنگ کر رہے ہیں تا کہ فلور ملوں اور آٹا دیلرو ں سمیت کسی کو ذخیرہ اندوزی کا موقع نہ مل سکے جب کہ یہ مجسٹریٹ کم سے کم قیمتو ں کے تعین کے لئے روزانہ علی الصبح سے را ت تک سبزی و غلہ منڈیو ں،دکا نو ں،بازارو ں،شا پنگ مالز اور فلور ملو ں میں محکمہ خورا ک و زراعت کے حکا م کے ہمراہ خود جا کر ان کی چیکنگ کر رہے ہیں۔اجلاس کو ہزارہ ڈویژن کے یو ٹیلٹیی سٹوروں پر وقتاً فو قتاً آٹے اور چینی کی قلت سے آگا ہ کر تے ہو ئے  بتا یا گیا کہ یو ٹیلٹیی سٹورو ں اور بازارو ں،منڈیو ں وغیرہ میں خورا ک کی روزانہ کی صو رتحا ل کے با رے میں تفصیلی اعداد و شما ر اکھٹے کر کے کمشنر ہزارہ کے ذریعے اعلی صو با ئی حکا م کو ار سا ل کئے جا رہے ہیں۔کمشنر ہزارہ،جو اشیا ء خورد نی کی دستیا بی اور قیمتو ں کے با رے میں روزانہ شام کو اجلاس منعقد کر رہے ہیں، نے بتا یا کہ صو بے کے تما م کمشنرو ں کا اسی طر ح کا اجلاس روزانہ شا م کو ویڈیو لنک پر چیف سیکر ٹری کی صدا رت میں بھی منعقد کیا جا رہا ہے جس سے ظا ہر ہو تا ہے کہ صو با ئی حکو مت اس مسئلے  پر بہت سنجیدہ ہے۔کمشنر ریا ض خان محسود نے کہا کہ اگرچہ پو رے ہزارہ ڈویژ ن میں آٹے چینی سمیت خوردنی اشیا ء کی کو ئی قلت سا منے نہیں آئی تا ہم قیمتوں میں اضا فے سے متعلق صا رفین کی شکا یات دور کر نے کے لئے مزید سخت اقدا ما ت کی ضرورت ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -