ملتان، مہنگائی،گراں فروشی کنٹرول کرنے کیلئے منصوبہ بندی فائنل

      ملتان، مہنگائی،گراں فروشی کنٹرول کرنے کیلئے منصوبہ بندی فائنل

  

ملتان (نیوز  رپورٹر)حکومت نے سہولت بازار قائم کرکے مہنگائی کا توڑ نکال لیا جب کہ ضلعی انتظامیہ ملتان نے ضلع میں 6 سہولت بازار سجا دیئے ہیں۔ان سہولت بازاروں میں آٹا،چینی،گھی،سبزی و فروٹ سمیت تمام اشیائے ضروریہ مقررہ قیمتوں پر دستیاب ہیں۔گزشتہ روز وزیر توانائی پنجاب ڈاکٹراختر ملک اور ڈپٹی کمشنر عامر خٹک نے ممتاز آباد سہولت بازار کا دورہ کیا۔(بقیہ نمبر26صفحہ6پر)

اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر سٹی عابدہ فرید،مارکیٹ کمیٹی،محکمہ انڈسٹریز اور کارپوریشن کے افسران بھی ان کے ہمراہ تھے۔صوبائی وزیر ڈاکٹر اخترملک نے کہا کہ پچھلی حکومت نے معیشت کا جنازہ نکال دیا تھا جس کا خمیازہ مہنگائی کی صورت میں ہمیں بھگتنا پڑ رہا ہے جب کہ موجود حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے معیشت اب بہتری کی طرف گامزن ہے،معیشت کی بہتری کے اثرات جلد عوام تک پہنچیں گے۔وزیر توانائی نے کہا کہ آٹا،چینی اور دیگر اشیائے ضروریہ کی کنٹرول ریٹ پر فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ سہولت بازار قائم کرکے حکومت نے مہنگائی کا حل نکال لیا ہے،سہولت بازارصوبہ بھر میں ہر تحصیل کی سطح قائم کئے گئے ہیں۔حکومت نے مہنگائی اور گرانفروشی پر کنٹرول کے لئے منظم پلاننگ کر لی ہے،حکومت آٹے پر اربوں روپے کی سبسڈی دے رہی ہے۔ڈپٹی کمشنرعامر خٹک نے کہا کہ ملتان شہر میں شمس آباد،مدنی چوک،ممتاز آباد اور نواب پور روڈ پر سہولت بازار قائم کئے گئے ہیں۔شجاع آباد اور جلالپورپیروالا میں سہولت بازار قائم کر دیئے ہیں،سہولت بازاروں میں 20 کلوآٹے کا تھیلا860 روپے میں دستیاب ہے جب کہ تمام اشیائے ضروریہ کنٹرول ریٹ پر فراہم کرنے کیلئے سٹال لگا دیئے گئے ہیں۔آٹے کی مقررہ قیمت پر وافر مقدار میں فراہمی کے لئے ضلع میں 77 سیل پوائنٹس بھی قائم کئے گئے ہیں۔ان سہولت بازاروں میں صفائی اور سکیورٹی کے بھرپور انتظامات کئے گئے ہیں،سہولت بازاروں میں کورونا ایس او پیز پر مکمل عمل کیا جارہا ہے۔سہولت بازاروں میں محکمہ صحت اور ریسکیو1122 نے کیمپ بھی لگا دیئے ہیں۔علاوہ ازیں حکومت نے ناجائز منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزں کے خلاف بھرپور مہم چلانے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔اس سلسلہ میں وزیرتوانائی پنجاب ڈاکٹراخترملک اور ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی زیر صدارت پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کااجلاس بھی منعقد ہوا۔معاون خصوصی جاویداخترانصاری،احمد حسن ڈیہڑایم این اے،ایم پی ایز وسیم خان بادوزئی، سلیم لابر،سبین گل،عدنان ڈوگر،چیئرمین ایم ڈی اے میاں جمیل قریشی،خالد جاوید وڑائچ،اکرم کنہوں،عمران شوکت، عزیزرسول سندیلہ،اکرم چاون اورشاہد مظفر بھی اجلاس میں شریک تھے۔صوبائی وزیر ڈاکٹر اخترملک نے کہا کہ ناجائز منافع خوروں کے ساتھ کوئی رعایت نہ برتی جائے،گرانفروشوں کے خلاف بلا امتیاز کارروائی کی جائے۔حکومت کو عوام کے مفادات کے علاوہ اور کوئی چیز عزیز نہیں ہے،پرائس مجسٹریٹس مارکیٹوں کے متواتر وزٹ کریں۔وزیرتوانائی پنجاب نے کہا کہ پرائس کنٹرول کے لئے ٹائیگر فورس کی خدمات بھی حاصل کی جائیں۔ڈپٹی کمشنرعامر خٹک نے کہا کہ پرائس مجسٹریٹس کی کارکردگی کو روزانہ کی بنیاد پر جانچا جاتا ہے،نرخنامے آویزاں نہ کرنے والے دکانداروں کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت کی،پرائس کنٹرول کی درجہ بندی کے حوالے سے ملتان کی صوبہ بھر میں کارکردگی تیسرے نمبر پر ہے۔عامر خٹک نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ تاجر برادری میں خوف و ہراس نہیں پھیلانا چاہتی،تاجر برادری کو اشیائے ضروریہ کے سٹاک کو رجسٹر کرانے کا آپشن دیا گیا ہے۔پرائس مجسٹریٹس فلور ملز کی طرف سے مقررہ فلور شاپس پر بھی آٹا چیک کریں اور کسی دکاندار کے ساتھ ناانصافی نہ کریں۔جن پرائس مجسٹریٹس کی کارکردگی بہترین ہوگی انہیں تعریفی سرٹیفکیٹ دئیے جائیں گے۔خراب کارکردگی دکھانے والے پرائس مجسٹریٹس کو ضلع بدر کردیا جائے گا۔اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ گزشتہ18 ایام کے دوران 56 ناجائز منافع خوروں کو گرفتار کیا گیا اور گرانفروشوں کو 24 لاکھ 98 ہزار روپے جرمانہ بھی کیا گیا ہے۔

دورہ 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -