اضافی چارجز کی وصولی، زکریا یونیورسٹی  انتظامیہ کیخلاف ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر

  اضافی چارجز کی وصولی، زکریا یونیورسٹی  انتظامیہ کیخلاف ہائی کورٹ میں ...

  

 ملتان(سپیشل رپورٹر)اسلامی جمعیت طلبہ زکریا یونیورسٹی نے کا کرونا(بقیہ نمبر4صفحہ6پر)

 وائرس کے دوران یونیورسٹی بند ہونے کے باوجود طلبہ سے اُن تمام اضافی چارجز سمیت فیس لینے پر لاہور ہائیکورٹ میں پٹیشن دائر کردی.تفصیل کے مطابق  کورونا وائرس کے دوران بہائالدین زکریا یونیورسٹی ملتان 13 مارچ 2020 کو بند کردی گئی تھی جس کے بعد یونیورسٹی انتظامیہ نے آن لائن کلاسز شروع کردی جو تاحال جاری ہیں مگر یونیورسٹی انتظامیہ طلبہ سے وہ تمام چارجز فیس کے ساتھ وصول کررہی ہے جن سہولیات سے طلبہ مُستفید ہوئے اور نہ اُن سے کوئی اور فائدہ اُٹھایا، جیسا کہ ٹرانسپورٹ فیس، میڈیکل فیس، لائبریری فیس، ہاسٹل فیس شامل ہے اس سلسلے میں یونیورسٹی انتظامیہ کو با قائدہ 9 درخواست دی گئی کہ اپنے فیصلہ پر نظرثانی کریں لیکن حکام نے کوئی جواب نہیں دیا  جس پر  طالبعلم محمد نعمان علوی  اور عبدالعظیم باری نے لاہور ہائیکورٹ کورٹ ملتان بنچ میں یونیورسٹی کے خلاف رٹ دائر کرتے ہوئے یہ مؤقف اختیار کیا کہ جن سہولیات سے طلبہ نے استعمال تک نہیں کیا اُن کے چارجز وہ کیسے دیں؟ طلبہ 805 ماہ سے ہاسٹل بند ہیں پھر بھی طلبہ سے ہاسٹل کی فیس لینا جنوبی پنجاب کے غریب طلبہ کے ساتھ ظلم اور ناانصافی ہے جس پر لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ نے کہا کہ  پنجاب یونیورسٹی لاہور کوروں نا وائرس کے دوران یونیورسٹی بند ہونے پر طلبہ سے صرف ٹیوشن فیس وصول لے رہی ہے تو زکریا یونیورسٹی کیوں طلبہ پر ظُلم کررہی ہے وائس چانسلر اور گورنر پنجاب کو 30 دن کے اندر اندر اس پر فیصلہ کرنے کا حُکم جاری کریں۔

پٹیشن دائر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -