بے کسی ہے اور دل ناشاد ہے| کلیم عاجز|

بے کسی ہے اور دل ناشاد ہے| کلیم عاجز|
بے کسی ہے اور دل ناشاد ہے| کلیم عاجز|

  

بے کسی ہے اور دل ناشاد ہے

انہیں دونوں سے گھر آباد ہے

اب انہیں کی فکر میں صیاد ہے

جن کے نغموں سے چمن آباد ہے

جو مجھے برباد کر کے شاد ہے

اس ستم گر کو مبارک باد ہے

تم نے جو چاہا وہی ہو کر رہا

یہ ہماری مختصر روداد ہے

بے بسی بن کر نہ ٹپکے آنکھ سے

دل میں جو اک حسرتِ فریاد ہے

شاعر: کلیم عاجز

 ( شعری مجموعہ:جب فصلِ بہاراں آئی تھی؛سالِ اشاعت،1990)

Be  Kasi    Hay   Aor   Dil  Na Shaad   Hay

Inhen   Donon   Say   Ghar   Abaad   Hay

 Ab   Unheen   Ki   Fikr   Men   Hay   Sayyaad

Jin  K   Naghmon   Say    Chaman    Aabaad   Hay

Jo   Mujhay   Barbaad   Kar   K   Shaad   Hay 

Uss   Sitam   Gar   Ko   Mubarak   Baad   Hay

 Tum   Nay   Jo   Chaaha   Wahi   Ho   Kar   Raha

Yeh   Hamaari   Mukhtasar   Rudaad   Hay

 Be   Basi   Ban    Kar   Na   Tapkay   Aankh   Say

Dil   Men   Jo   Ik    Hasrat-e-Faryaad   Hay

 Poet: Kaleem   Aajiz

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -